2 مہینے تک کورونا وائرس میں مبتلا رہنے والے شخص نے اپنی پہلے اور بعد کی تصاویر سوشل میڈیا پر لگا دیں، دیکھ کر لوگوں کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

2 مہینے تک کورونا وائرس میں مبتلا رہنے والے شخص نے اپنی پہلے اور بعد کی تصاویر ...
2 مہینے تک کورونا وائرس میں مبتلا رہنے والے شخص نے اپنی پہلے اور بعد کی تصاویر سوشل میڈیا پر لگا دیں، دیکھ کر لوگوں کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس انسانی جسم کو کس طرح تباہ کرتا ہے؟ امریکہ میں طبی عملے کے ایک فرد مائیک شولٹز کو یہ موذی وباءلاحق ہوئی اور وہ 57دن تک ہسپتال میں رہا۔ اب صحت مند ہونے کے بعد اس نے اپنی کورونا وائرس لاحق ہونے سے ایک مہینہ پہلے کی اور اب کی دو تصاویر پوسٹ کی ہیں اور ان تصاویر میں فرق دیکھ کر کوئی بھی شخص دہل کر رہ جائے۔ میل آن لائن کے مطابق 43سالہ مائیک کی پہلی تصویر 16مارچ کی ہے جس میں وہ ہٹا کٹا ہوتا ہے اور جم میں کثرت سے اس نے مسل بنا رکھے ہوتے ہیں۔

اس کے ایک ماہ بعد اسے کورونا وائرس لاحق ہوا اور وہ 57دن تک ہسپتال میں رہا۔ اس دوران 6ہفتے تک وہ وینٹی لیٹر پر رہا۔ اس کے بعد بنائی گئی دوسری تصویر میں وہ اتنا کمزور نظر آ رہا ہوتا ہے کہ جیسے سالہا سال سے بیمار ہو۔ اس کے سینے اور بازوﺅں کے مسل یکسر غائب ہوتے ہیں اور اس کے چہرے پر بڑھاپا طاری ہوتا ہے۔ مائیک کا کہنا ہے کہ ”کورونا وائرس لاحق ہونے کے بعد میں اتنا کمزور ہو گیا تھا کہ میں ایک ہاتھ سے اپنا فون بھی نہیں اٹھا پاتا تھا۔اس وباءمیں مبتلا ءہونے کے بعد میں نے موت کو اپنی آنکھوں کے سامنے دیکھا۔ میں خوش قسمت ہوں کہ اس سے بچ نکلا۔“ واضح رہے کہ مائیک سین فرانسسکو میں ایک ہسپتال میں نرس کی ملازمت کرتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -