پی ایچ اے ایمپلائز یونین سراپا ءاحتجاج ،ہڑتال کی دھمکی

پی ایچ اے ایمپلائز یونین سراپا ءاحتجاج ،ہڑتال کی دھمکی

                                          لاہور(اپنے نمائندے سے)پی ایچ اے کی ایمپلائز یونین سی بی اے نے چار سے پانچ ہزار ملازمین کے ہمراہ ریس کورس پارک میں کنٹریکٹ ملازمین کو ریگولر کرنے ،ڈیلی ویجز پر تعینات ملازمین کو مستقل کرنے اور ان کی تنخواہوں کے بقایا جات کی فوری ادائیگی کے مطالبات ڈی جی پی ایچ اے کے سامنے رکھ دیے، ملازمین کے مطالبات کی منظوری تک ہڑتال کا اعلان ،ڈی جی پی ایچ اے کی یقین دہانی پر آٹھ گھنٹے بعد احتجاج ختم کر دیا گیا،روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق پی ایچ اے کی ایمپلائز یونین سی بی اے کے جنرل سیکرٹری حافظ ابرار احمد سرپرست رانا صفدر ،چیئرمین ملک رحیم اعوان اور صدر ملک اشرف سوہنا کے زیر قیادت پارکس اینڈ ہارٹی کلچر کے چار سے پانچ ہزار ملازمین نے ریس کور س کے باہر انتظامیہ کے سامنے اپنے مطالبات رکھتے ہوئے شدید احتجاج کیا اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے نوٹس لینے کی اپیل بھی کی ،یونین عہدیداران نے آٹھ گھنٹے تک احتجاج کا سلسلہ شروع کیا جس سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو کر رہ گیا ،مظاہرین کا کہنا تھا کہ بارہ سے پندرہ سال تک ڈیلی ویجز پر کام کرنے والے ملازمین کو مستقل کیا جائے اس کے علاوہ کنٹریکٹ بنیاد پر بھرتی کئے جانے والے ملازمین کو بھی ریگولر کیا جائے جبکہ مالیوں ،سپروائزراور دیگر فیلڈ سٹاف کی تنخواہوں کے بقایا جات کی مد میں چار کروڑ پینتیس لاکھ کے واجبات ہیں جو فوری طور پر کلیئر کئے جائیں اس ضمن میں اعلیٰ عدالتوں کے فیصلوں پر بھی عمل درآمد نہیں کیا جارہا جنر ل سیکریٹری حافظ ابرار نے مزید بتا یا کہ آٹھ سے دس سال کے عرصہ کے دوران پی ایچ اے انتظامیہ ملازمین کی سنیارٹی لسٹ کے مطابق پروموشن نہیں دے رہی جو کہ سراسر زیادتی ہے پی ایچ اے ملازمین کا آٹھ گھنٹے تک جاری رہنے والا احتجاج بعد ازاں ڈی جی پی ایچ اے میاں شکیل کی جانب سے آٹھ روز میں مطالبات کی منظوری کی یقین دہانی پر ختم کر دیا گیا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1