امریکی ،کانگرس نے ملالہ یوسفزئی سکالر شپ ایکٹ کی منظوری دیدی

امریکی ،کانگرس نے ملالہ یوسفزئی سکالر شپ ایکٹ کی منظوری دیدی

                      واشنگٹن(آن لائن) امریکی کانگریس نے ملالہ یوسفزئی سکالرشپ قانون کی منظوری دی ہے جس کے تحت پاکستانی لڑکیوں کیلئے سکالرشپس کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ریپبلکن خاتون رکن کانگریس علینا روز لیجٹسنن کے تحریر کئے گئے ملالہ یوسفزئی سکالرشپ قانون کے تحت یو ایس ایڈ کے میرٹ اور ضروریات کی بنیاد پر سکالرشپ پروگرام کے ذریعے پاکستانی خواتین کیلئے سکالرشپس کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔ کانگریس میں اس قانون کی منظوری کے بعد کانگریس کی خارجہ امور کمیٹی کی چیئرپرسن ای ڈی رائس نے کہا کہ گذشتہ کئی سالوں سے مجھے افغانستان اور پاکستان جیسے ممالک میں تعلیم کی بدترین صورتحال اور انتہاءپسندی کو فروغ دینے والے مدارس کے بڑھتے ہوئے اثرورسوخ پر گہری تشویش تھی۔ انہوں نے کہا کہ ان ممالک میں خواتین کو تعلیم تک رسائی سے بھی دبایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس تمامتر صورتحال کے باعث آج ملالہ یوسفزئی کے نام پر سکالرشپ قانون کی منظوری دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ملالہ ایک نڈر اور انتہائی حوصلے کی مالک لڑکی ہے جس نے صرف 19 سال کی عمر میں طالبان کا ڈٹ کر مقابلہ کرتے ہوئے ان کے قاتلانہ حملے کا بھی سامنا کیا اور خواتین اور لڑکیوں کی نہ صرف موجودہ بلکہ آنے والی نسل کیلئے بھی مثال قائم کی کہ تعلیم کا حصول ان کا بنیادی حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ پاکستان میں سکالرشپ پروگرام کے ذریعے پہلے ہی پاکستان میں تعلیم کو فروغ دے رہا ہے تاہم اب اس قانون کے تحت پاکستانی خواتین کیلئے سکالرشپس کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی