ہائیکورٹ نے اول جماعت کے نصاب کی اشاعت عدالتی فیصلے سے مشروط کر دی

ہائیکورٹ نے اول جماعت کے نصاب کی اشاعت عدالتی فیصلے سے مشروط کر دی

لاہور (نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کو اول جماعت کا نصاب شائع کرنے سے روکتے ہوئے نصاب کی اشاعت عدالتی فیصلے سے مشروط کر دی۔ جسٹس اعجازالاحسن نے کیس کی سماعت کی۔درخواست گزار پبلشرز کے وکیل شفقت محمود چوہان نے موقف اختیار کیا کہ حکومت پنجاب غیر ملکی این جی اوز کے ساتھ مل کر اول جماعت کا نصاب خود شائع کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ نصاب کی اشاعت میں غیر ملکی این جی اوزکی سفارشات کو مد نظر رکھا جا رہا ہے جو کہ پاکستان کی نظریاتی اساس کے خلاف ہے۔انہوں نے عدالت کوبتایاکہ غیر ملکی این جی اوزکی جانب سے کتب کی اشاعت سے مقامی پبلشرز کو مسابقت کا موقع فراہم نہ کیا جانا مسابقتی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔جس پر عدالت نے سیکرٹری سکولز پنجاب اور چیئرمین پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کو تحریری طور پر جواب داخل کرنے کی ہدائت کرتے ہوئے نصاب شائع کرنے سے روک دیا۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت دو ہفتوں تک ملتوی کر دی۔

مزید : صفحہ آخر