عمران اب چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان سے بھگانے کی کوشش کر رہے ہیں احسن اقبال

عمران اب چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان سے بھگانے کی کوشش کر رہے ہیں احسن اقبال ...

                لاہور (کامرس رپورٹر) وفاقی وزیر منصوبہ بندی و اصلاحات احسن اقبال نے کہا ہے کہ عمران خان چینی صدر کا دورہ پاکستان سبوتاژ کرنے کے بعد اب چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان سے بھگانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ 30 نومبر کو پاکستانی عوام ملکی ترقی کو روکنے کی ساز ش ناکام بنا دیں گے۔ ساو¿تھ ایشیاءکنکلیو اینڈ گالف ٹورنامنٹ کی تقریب کے بعد ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ عمران خان کو یہ سمجھنا چاہیے ملکی مسائل کنٹینرز پر بیٹھ کر تقریریں کرنے سے حل نہیں ہوں سکتے۔ احسن اقبال نے کہا کہ چاہے ”نیا پاکستان“ ہو، روشن پاکستان یا توانا پاکستان، کوئی ایک پارٹی یا ادارہ تنہا اسے تعمیر نہیں کر سکتا۔ ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے سب کو مل کر کام کرنا ہو گا۔ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ وہ ڈاکٹر طاہر القادری کو پاکستان آمد پر خوش آمدید کہتے ہیں، سانحہ ماڈل ٹاو¿ن پر انہیں انتہائی افسوس ہے۔ حکومت نے جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم تشکیل دے دی ہے، جس میں حساس اداروں کے ارکان بھی شامل ہیں، جو شفاف اور غیر جانبدار تحقیقات کر کے ذمہ داران کو سزا دلوائیں گے۔ قبل ازیں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان چین اقتصادی راہداری کا منصوبہ خطے سارے خطے کی ترقی کا منصوبہ ہے۔ موجودہ حکومت کی کاوشوں کے باعث چین پاکستان میں ملکی تاریخ کی سب سے بڑی سرمایہ کاری کرنے جا رہا ہے۔ حکومت چین کے تعاون سے 10 ہزار 400 میگاواٹ بجلی کے منصوبوں پر کام شروع کرنے جا رہی ہے، جن میں سے 9 ہزار میگاواٹ کے منصوبے 2018ءمیں بجلی کی پیداوار شروع کر دیں گے، جس سے ملک میں لوڈشیڈنگ میں نمایاں کمی واقع ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ ہر دو سال بعد سیاسی تبدیلی کی تحریکیں چلانے سے ملک میں کبھی ترقی نہیں ہو سکتی۔ انہوں نے مزید کہا کہ کوئلے سے بجلی کی پیداوار کے منصوبوں کے لئے 3 سال جبکہ پن بجلی کے منصوبوں کے لئے 5 سے 10 سال تک کا وقت درکار ہے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چئیرمین نجکاری کمیشن محمد زبیر نے کہا کہ کوئی ادارہ 50 فیصد اضافی افرادی قوت کے ساتھ منافع بخش نہیں بن سکتا۔ نجکاری کے حوالے سے حکومت کی واضح پالیسی ہے کہ سرکاری تحویل میں چلنے والے غیر منافع بخش اداروں کو مستحکم اور تجربہ کار انتطامیہ کے سپرد کیا جائے ۔

احسن اقبال

مزید : صفحہ آخر