بھارتی ڈرون کی تباہی سے پاکستان کا واضح پیغام

بھارتی ڈرون کی تباہی سے پاکستان کا واضح پیغام

  



لائن آف کنٹرول پر اگلے پاکستانی مورچوں کی جاسوسی کرنے والے بھارتی ڈرون کو پاک فوج نے مار گرایا۔ یہ بھارتی ڈرون پاکستانی حدود کے ساٹھ میٹر اندر تک آ گیا تھا۔ اسے سرحدی خلاف ورزی کرتے ہی نشانہ بنایا گیا۔ اس کا ملبہ پاکستانی حدود میں گرا، جسے قبضے میں لے لیا گیا۔ نشانہ بننے والا یہ ڈرون ’’کواڈکاپڑ‘‘ کہلاتا ہے۔ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا، جب بھارتی حکمرانوں نے جنگی جنون میں مبتلا ہو کر لائن آف کنٹرول پر بلا اشتعال خلاف ورزیوں کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔ بھارتی فوجی عام طور پر شہری آبادیوں کو نشانہ بنا کر آئے روز معصوم اور بے گناہ پاکستانیوں اور کشمیریوں کو شہید کر رہے ہیں۔ گزشتہ روز بھی تین بہن بھائیوں سمیت چار بچے شہید کئے گئے جبکہ 6 افراد زخمی ہوئے۔ دفتر خارجہ نے بھارت کی طرف سے سرحدی خلاف ورزیوں پر بھارتی ہائی کمشنر کو طلب کر کے احتجاجی مراسلہ دینے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ اقوام متحدہ میں بھی یہ معاملہ اٹھایا جائے گا۔ توقع ہے کہ پاکستان کی طرف سے بھارت کے جارحانہ اور انتہائی غیر ذمہ دارانہ رویئے کے خلاف عالمی برادری کو متوجہ کرنے کا بروقت اور دانشمندانہ فیصلہ دور رس نتائج کا حامل ہوگا۔بھارت نے بلا اشتعال سرحدی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جس منفی انداز سے شروع کر رکھا ہے، بری، بحری اور فضائی حدود کی خلاف ورزی کر کے بھارت نے ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔ تین روز قبل جب بھارتی آبدوز نے پاکستان کی سمندری حدود میں چپکے سے داخل ہونے کی کوشش کی تھی تو اس وقت بھی پاک بحریہ کی طرف سے بھارتی آبدوز کو کسی قسم کی کارروائی سے روکتے ہوئے واپس بھارتی حدود میں دھکیل دیا تھا۔ اس سے پہلے بھارتی فوجیوں نے لائن آف کنٹرول کے مختلف مقامات پر فائرنگ کر کے پاک فوج کے جوانوں اور شہریوں کو شہید کرنے کا سلسلہ شروع کر رکھا تھا، جس پر پاک فوج نے منہ توڑ جواب دیتے ہوئے درجنوں بھارتی فوجیوں کو ہلاک اور مورچوں کو تباہ کر دیا تھا۔ اگرچہ مودی سرکار کو اپنے جنگی جنون کی وجہ سے ہر مقام پر پاک فوج کی جانب سے منہ توڑ جواب دیا جا رہا ہے لیکن مودی سرکار باز نہیں آ رہی۔ پاک فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے ایک بیان میں واضح کیا ہے کہ پاک فوج روایتی جنگ کے لئے بھی ہر وقت تیار ہے۔ اس کے ساتھ ہی ائیر چیف مارشل سہیل امان نے بھی کہا ہے کہ پاک فضائیہ قوم کی توقعات پر پوری اترتی رہے گی۔ بھارتی حکمرانوں نے مقبوضہ کشمیر میں آزادی کا مطالبہ کرنے والے نہتے اور مظلوم کشمیریوں پر اپنے فوجیوں کے بہیمانہ مظالم چھپانے کے لئے جارحانہ رویہ اختیار کر رکھا ہے لیکن مودی سرکار کو اپنے اس مقصد میں کامیابی حاصل نہیں ہو سکی۔ عالمی برادری کو پاکستان کی جانب سے بھارت کا مکروہ چہرہ برابر دکھایا جا رہا ہے ۔ بھارتی حکمرانوں کو مسئلہ کشمیر سمیت تمام تنازعات مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کا پاکستانی مشورہ قبول کر لینا چاہئے۔ اس مثبت راہ عمل سے خطے میں امن کے قیام کو یقینی بنایا جا سکتا ہے۔ پاک فوج نے بھارتی ڈرون کو مار گرا کر بھی بھارت کو یہی پیغام دیا ہے۔

مزید : اداریہ