امریکامیں 16سال تک قید رہنے والا فلسطینی رہائی کے بعد موریتانیہ منتقل

امریکامیں 16سال تک قید رہنے والا فلسطینی رہائی کے بعد موریتانیہ منتقل

رام اللہ (اے این این)امریکا کی جیل میں سولہ سال تک قید رہنے والے ایک فلسطینی راشد الزغاری کو رہائی کے بعد افریقی ملک موریتانیہ منتقل کر دیا گیا ہے۔فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق کلب برائے اسیرن کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ 60سالہ الزغاری کو حال ہی میں امریکی جیل سے سولہ سال بعد رہا کیا گیا تھا۔ رہائی کے بعد اسے موریتانیہ پہنچا دیا گیا ہے۔کلب برائے اسیران نے کہا ہے کہ فلسطینی شہری راشد الزغاری کی رہائی کیلئے امریکی حکام اور موریتانیہ کے درمیان تین سال سے مذاکرات جاری تھے۔ رہائی کے بعد اسے جمہوریہ موریتانیہ منتقل کردیا گیا ہے۔ راشد الزغاری فلسطین کے علاقے غرب اردن کے شمالی شہر بیت لحم کے الدھیشہ کیمپ سے تعلق رکھتے ہیں۔راشد الزغاری پر الزام ہے کہ وہ تنظیم آزادی فلسطین کے فلسطین سے باہر اسرائیل کے خلاف مزاحمتی سرگرمیوں میں ملوث رہا ہے۔ اسی الزام کے تحت اسے امریکا میں سولہ سال تک قید رکھا گیا۔

امریکی انتظامیہ کی طرف سے الزام عاید کیا گیا تھا کہ راشد الزغاری نے 1982 میں امریکا کے ایک ہوائی جہاز میں دھماکہ خیز مواد رکھ کر بم دھماکہ کیا تھا۔ امریکا منتقلی سے قبل کئی سال تک الزغارید کو یونان کی جیل میں قید رکھا گیا۔ اس کی مدت حراست سنہ 2013 میں ختم ہوگئی تھی مگر اس بات کا تعین نہیں کیا جاسکا تھا کہ اسے رہائی کے بعد کہاں بھیجا جائے۔

مزید : عالمی منظر