بھارت مقبوضہ کشمیر کی پولیس کو حریت پسندوں کاساتھی مانتا ہے: علی گیلانی

بھارت مقبوضہ کشمیر کی پولیس کو حریت پسندوں کاساتھی مانتا ہے: علی گیلانی

سرینگر(اے این این) کل جماعتی حریت کانفرنس(گ) کے سربراہ سید علی گیلانی نے مقبوضہ کشمیر میں پولیس کے طرز عمل کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی پولیس اس اوقات میں رہے جو فوج تعینات کر کے بھارت نے اسے دے رکھی ہے،بھارت کی کسی سرکار نے وادی کی پولیس پر اعتبار نہیں کیا،بھارت یہاں کی پولیس کو آزادی پسندوں کا ساتھی مانتا ہے،اسی لئے پولیس سے تمام اختیارات چھین کر فوج کے سپرد کئے گئے ہیں ،مقبوضہ پولیس پوری کشمیر ی قوم کو ختم کیوں نہ کر دے بھارت میں اس کی عتباریت اور افادیت مشکوک ہی رہے گی،اس لئے شاہ سے زیادہ شاہ کے وفادار بننے کی کوشش نہ کی جائے ، اپنے گریبان میں جھانک کر اپنا محاسبہ کریں۔سید علی گیلانی نے وادی بھر میں پولیس کی جانب سے روا رکھی جارہی مبینہ زیادتیوں،توڑ پھوڑ ،ٹارچر ،گرفتاریوں اور ظلم وجبر پر سخت رد عمل ظاہر کرتے ہوئے پولیس فورس کو یاد دلایا کہ NITکے ایک معمولی لاٹھی چارج کو بھارت کے نیتاؤں اور ان کے میڈیا نے پوری کشمیری قوم کو دنیا کے سامنے شرمسار کرنے کے لیے استعمال کیا، وہیں پولیس کی وفاداریوں کو کوڈے دان میں ڈال کر ان کو سرِ عام رسوا کرکے حکومت کو یہ صلح دی کہ جموں کشمیر پولیس کو آزادی پسندوں کے مددگار قرار دیکر ان کو غیر مسلح کرکے تمام اختیارات بھارتی فوج کو منتقل کئے جائیں۔

لیکن اس کے باوجود یہی پولیس دہلی کے آقاؤں کی خوشنودی حاصل کرنے کے لیے بھارتی فورسز کے ظلم وجبر اور سفاکیت اور درندگی کے گھناؤنے جرائم کے مقامی چہرے بن جاتے ہیں۔ انہوں نے پولیس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر آپ پوری قوم کو ختم بھی کردیں گے تب بھی بھارت میں آپ کی اعتباریت اور افادیت مشکوک ہی رہے گی۔

مزید : عالمی منظر