جرائم کی شرح میں خطرناک حد تک اضافہ انتہائی تشویش ناک ہے،میاں مقصود احمد

جرائم کی شرح میں خطرناک حد تک اضافہ انتہائی تشویش ناک ہے،میاں مقصود احمد

  



لاہور ( نمائندہ خصوصی )امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد نے کہاہے کہ لاہور سمیت صوبے بھر میں جرائم کی شرح میں خطرناک حد تک اضافہ انتہائی تشویش ناک ہے۔آئے روز چوری ڈکیتی اور قتل وغارت کے واقعات میڈیا کی زینت بن رہے ہیں۔ مجرم اور جرائم پیشہ عناصر کھلے عام دندناتے پھر رہے ہیں جبکہ حکومت اور قانون نافذ کرنے والے ادارے عملاًخاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ میں عوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ پنجاب پولیس کے سالانہ بجٹ میں اضافہ کرنے اور دیگر مراعات دینے کے باوجودصوبے میں لاقانونیت کم ہونے کی بجائے بڑھتی جارہی ہے۔اغوا برائے تاوان،چوری ڈکیتی،قتل وغارت گری اور اسٹریٹ کرائمز جیسی وارداتوں سے عوام پریشان ہیں۔لوگوں کی جان ومال کے تحفظ کومقدم رکھتے ہوئے پنجاب حکومت پولیس کی کارکردگی کو موثر اور بہتربنانے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدمات کرے۔انہوں نے کہاکہ پولیس اہلکاروں اور افسران کے اخراجات کی سالانہ رقم میں اضافہ کرکے اس کو72ارب90کروڑ7لاکھ49ہزار کیاگیاتھا مگر اس کے باوجود عوام کو تحفظ نام کی کوئی سہولت میسر نہیں ہے۔ پنجاب پولیس میں اس وقت50اہلکار سپیشل پوزیشن پر کام کررہے ہیں جن پر سالانہ4کروڑ59لاکھ36ہزارروپے کی خطیر رقم صرف ہورہی ہے لیکن نتیجہ صفر ہے۔میاں مقصود احمد نے مزیدکہاکہ صوبے میں تھانہ کلچر کے حوالے سے اصلاحات اور جدیدٹیکنالوجی کے استعمال کے ذریعے جرائم کوکنٹرول کیاجانا چاہئے۔بدقسمتی سے پولیس اور تھانہ کلچر کے حوالے سے عوام کی کوئی مثبت رائے نہیں ہے۔لوگ کسی بھی قسم کی واردات کانشانہ بننے کے باوجودنارواسلوک کے پیش نظر پولیس کے پاس جانے سے کتراتے ہیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ صوبائی حکومت محکمہ پولیس سے رشوت خوری کے کلچرکاخاتمہ کرکے اہلکاروں کی اخلاقی تربیت کابندوبست کرے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1