دنیا کا سب سے موٹا شخص جو چل بھی نہیں سکتا لیکن گٹار بجانے کا ماہر

دنیا کا سب سے موٹا شخص جو چل بھی نہیں سکتا لیکن گٹار بجانے کا ماہر
دنیا کا سب سے موٹا شخص جو چل بھی نہیں سکتا لیکن گٹار بجانے کا ماہر

  



میکسیکوسٹی(نیوزڈیسک) اگر انسان کا وزن بڑھ جائے تو وہ کوئی بھی کام کرنے سے معذوز ہونے لگتا ہے لیکن آج ہم آپ کو دنیا کے سب سے موٹے شخص سے ملوائیں گے جو کھاناکھانے کا توشوقین ہے ہی اور ساتھ ہی وہ ایک ایسا کام کرتا ہے کہ دنیا بھر میں اس کا کوئی مقابلہ نہیں کرسکتا۔میکسیکو کے 32سالہ خوان پیدرو فرانکوکا وزن 500کلوگرام سے زائد ہوچکا ہے اور وہ اپنے زائد وزن کی وجہ سے چلنے پھرنے سے قاصر ہے،گذشتہ 15سال سے وہ ایک ہی بستر پر پڑا ہوا ہے لیکن یہ شخص گیٹار اس قدر خوبصو رت بجاتا ہے کہ کوئی بھی اس کامقابلہ نہیں کرسکتا۔وہ سکول کے دنوں میں ہی موٹا ہوچکا تھا لیکن ایک حادثے کی وجہ سے وہ ایک سال تک بستر سے لگارہا جس کی وجہ سے اس کا وزن بڑھتا رہا،جب اس کا وزن 100کلوگرام کے قریب پہنچا تو اس نے عوام الناس سے اپیل کی کہ وہ اسے پیسے دیں تاکہ وہ اپناعلاج کرواسکے۔وقت گزرنے کے ساتھ اس کا وزن بڑھتا گیا اور اس وقت وہ دنیا کا موٹا ترین آدمی بن چکا ہے۔ایک وقت آیا کہ اس نے لوگوں کو بتایا کہ وہ چھ سال تک اپنے پستر پر پڑاتھا اور اس کا وزن 350کلوگرام سے زیادہ ہوچکا تھا۔اس کا کہنا ہے کہ اب وہ کھانا پیناچھوڑ بھی دے تب بھی اس کا وزن بڑھ رہا ہے۔’’میں نے اپنے بڑھتے ہوئے وزن کی وجہ سے سکول جانا چھوڑدیا تھا ،لوگ مجھے مذاق کا نشانہ بناتے تھے۔‘‘اس کا کہنا ہے کہ اپنے بستر پر پڑا رہنے کی وجہ سے اس نے گیٹار بجانا شروع کیا اور اب وہ اس قدر ماہر ہوچکا ہے کہ لوگ اس کے گیٹار کی آواز پر مبہوت ہوجاتے ہیں۔اس نے اپنی خواہش کا اظہار کیا کہ وہ چاہتا ہے کہ دوبارہ باہرجائے،گاڑی چلائے،گانا گائے اور یہ باتیں اسے بہت اچھی لگتی ہیں۔

مزید : صفحہ آخر