عزاداری کے انعقاد کیلئے کسی قسم کی اجازت کی ضرورت نہیں‘ ساجد نقوی

عزاداری کے انعقاد کیلئے کسی قسم کی اجازت کی ضرورت نہیں‘ ساجد نقوی

  



ملتان،وہاڑی(سٹی رپورٹر،بیوروپورٹ،نمائندہ خصوصی)قائد ملت جعفریہ پاکستان اور اسلامی تحریک کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے واضح کیا ہے کہ عزاداری فکر حسینیؑ کی ترویج کا ذریعہ ہے، کسی قسم میں رکاوٹ کوتسلیم کرتے ہیں اور نہ ہی اس کے انعقاد کے لئے اجازت کی ضرورت محسوس کرتے ہیں، ریاست کا فرض ہے کہ وہ شہری آزادیوں کی حفاظت کرے، ماتمی جلوسوں اور مجالس کے(بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

(بقیہ نمبر1صفحہ12پر ) انعقاد میں اپنی انتظامی ذمہ داریاں دیانت داری سے ادا کرے۔کربلا کے بعدرہتی دنیا تک آزادی کی جدوجہد ہو یا ظلم و ناانصافی کے خلاف قیام ، آمریت کے خلاف مزاحمت ہو یا امر بالمعروف و نہی عن المنکر کے فریضے کی انجام دہی، ہر مرحلے میں سیدالشہدا ؑ کی ذات اور کردار کو رہنما تسلیم کیا جاتا ہے ۔سید الشہدا حضرت امام حسین علیہ السلام اور دیگر شہداء کربلا کے چہلم کے موقع پر پیغام میں علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ محسن انسانیت‘ نواسہ رسول اکرم ؐ حضرت امام حسین علیہ السلام کی ذات اور آپ کے اہداف آفاقی ہیں اس فلسفے کے تحت ہم یہ بات کہنے میں حق بجانب ہیں کہ عزاداری کے انعقاد کے لئے ہمیں کسی قسم کی اجازت لینے کی ضرورت نہیں بلکہ ریاست کا فرض ہے کہ وہ اپنے شہریوں کی آزادیوں اور حقوق پر قدغن نہ لگائے دریں اثناء وہاڑی سے بیورورپورٹ اور نمائندہ خصوصی کیمطابقساجد علی نقوی نے کہا ہے کہ نواسہ رسول ﷺحضرت مام حسین علیہ السلام نے صحرائے کربلا میں اپنے اصحاب وانصار سمیت شہادت کے درجے پر فائز ہو کر اسلام اور انسانیت کی بقا کا انتظام فرمادیا انہوں نے کہا حضرت امام حسین کی جدو جہد اور مشن کا مرکزی نکتہ دین محمدی کو یزیدی فکر اور یزیدی نظام سے محفوظ رکھنا تھا انہوں نے کہا یزیدی دور میں حکمران احکام الہی اور سنت رسولﷺکے مطابق زندگی گذارنے کے طور طریقوں کو بھلا کر گمراہی اور گناہ کی زندگی اختیار کر چکے تھے عدل اجتماعی سے گریز کرتے ہوئے مستقل طور پربے عدلی اور نا انصافی کو اسلامی معاشرے کا حصہ بنایا جا رہا تھا اور خدا نے انسان اور معاشرے کی بھلائی کے لئے شریعت کی شکل میں جو قوانین اور پابندی عائدکیں ان سے عملاً برات کرکے اپنے خود ساختہ قوانین رائج کئے جا رہے تھے ان خیالات کا اظہار علامہ سید ساجد علی نقوی نے شیعہ علما کونسل وہاڑی کے ضلعی راہنما محمد علی جعفری کے نام چہلم حضرت امام حسین ؑ کے موقعہ پر اپنے پیغام میں کہا علامہ ساجد نقوی نے کہا اس وقت قومی خزانے کو لوٹا جا رہا تھا کرپشن اور حرام خوری حکمرانوں کی عادت بن چکی تھی جس سے معاشی نا ہمواری غربت افلاس اور جہالت کو فروغ مل رہا تھا علامہ ساجد علی نقوی نے کہا کہ امام عالی مقام نے واضع کر دیا کہ آپ ؑ کی جد وجہد آپ کا سفر آپ کا قیام آپ کی شہادت اور پھر آپ کے خانوادپایہ زنجیر طویل سفر کا مقصد ذاتی مفادات شہرت دولت فقط حکومت یا نمود ونمائش نہیں تھابلکہ صرف اور صرف اصلاح امت او ر فلاح امت تھا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر