خیبر ایجنسی کی تحصیل لنڈیکوتل میں بجلی کی ناروا لوڈشیڈنگ بند کی جائے

خیبر ایجنسی کی تحصیل لنڈیکوتل میں بجلی کی ناروا لوڈشیڈنگ بند کی جائے

  



خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)خیبر ایجنسی کی تحصیل لنڈیکوتل میں بجلی کی ناروا لوڈشیڈنگ بند کی جائے، دوسرے علاقوں کے مقابلہ میں لنڈیکوتل میں زیادہ لوڈشیڈنگ کی جاتی ہے جو لنڈیکوتل کی عوام کے ساتھ ظلم ہے لنڈیکوتل میں رات کے وقت بجلی کی سپلائی منقطع کی جاتی ہے جو یہاں کی عوام کے ساتھ ظلم اور نا انصافی ہے، فاٹا پاکستان کا واحد علاقہ ہے ،پاکستان مسلم لیگ ن فاٹا اور خیبر ایجنسی کی رہنماوں کا مطالبہگزشتہ روز پاکستان مسلم لیگ ن فاٹا کے رہنما نوشیروان شینواری کی سربراہی میں خیبر ایجنسی کے رہنما اسرار خان شینواری اور ساجد افریدی نے لنڈیکوتل گرڈ سٹیشن عملہ کے ساتھ ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران نوشیروان اور اسرار شینواری نے گرڈ سٹیشن میں ڈیوٹی پر موجود اہلکاروں کے سامنے لنڈی کوتل میں زیادہ لوڈ شیڈنگ پر سخت اختجاج کیا اور انھیں کہا کہ لنڈیکوتل میں بجلی لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم کیا جائے اور گرڈ سٹیشن سے مساوی بنیاد پر مقامی آبادی کو بجلی فراہم کی جائے۔ نوشیروان شینواری نے ٹیسکو آفیشلز سے کہا کہ لنڈیکوتل میں بجلی کی زیادہ اور ناروا لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔اسرار شینواری نے کہا کہ فاٹا پاکستان کا واحد علاقہ ہے جہاں گورنر فنڈ سے 100فیصدبل دی جاتی ہے اور ٹیسکو چیف ذکا اللہ نے لنڈیکوتل بازار کی بجلی بل کے بہانے بند کی ہے جبکہ یہی بجلی وہ انڈسٹریل ایریاز کو فراہم کرتاہے۔ اسرار شینواری نے یہ بھی کہا کہ ہر ایجنسی اور باڑہ تحصیل سمیت مقامی آبادی کو 7سے 10گھنٹے بجلی فراہم کی جاتی ہے جبکہ لنڈیکوتل میں 24گھنٹے میں صرف 2گھنٹے بجلی ہوتی ہے جوکہ لنڈیکوتل کی عوام کے ساتھ ظلم ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر