محکمہ ملتان کے پٹواریوں نے لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹر ائزیشن کو کمائی کا ذریعہ بنا لیا

محکمہ ملتان کے پٹواریوں نے لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹر ائزیشن کو کمائی کا ذریعہ ...

ملتان ( نمائندہ خصوصی ) محکمہ مال ملتان کے پٹواریوں نے لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کو کمائی کا ذریعہ بنا رکھا ہے ‘ بورڈ آف ریونیو پنجاب کی جانب سے رواں سال اپریل کے دوران ضلع بھر کے درجنوں مواضعات بلاک کر دئیے اور پٹواریوں کو فرد ملکیت جاری کر نے سے روک دیا ‘ لیکن محکمہ مال کے پٹواریوں نے بورڈ آف ریونیو کے احکامات کو جوتے کی نوک پر رکھتے ہوئے ماہانہ لاکھوں روپے کمانا شروع کر رکھے ہیں ۔ ضلعی انتظامیہ ملتان نے بھی عدم دلچسپی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پٹواریوں کو نہ صرف فری ہینڈ دیدیا بلکہ خود بھی غیر قانونی اقدامات کا حصہ بن گئے ۔ معلوم ہوا ہے کہ تحصیل ملتان صدر سٹی کے مواضعات جہانگیر آباد ‘ جنگل بیڑہ ‘ درانہ لنگانہ ‘ جھکڑ پور سمیت نصف درجن سے زائد مواضعات بلاک کر دئیے اور ایک نوٹیفکیشن جاری کر کے پٹواریوں کو فرد ملکیت کے (بقیہ نمبر20صفحہ12پر )

اجراء سے روک دیا ۔ اس عمل کے بعد بلاک شدہ پٹواریوں کو ایک اغلاط نامہ دیا گیا اور انہیں فوری طور پر یہ غلطیاں درست کرنے کیلئے کہا گیا ۔ بتایاجاتا ہے اغلاط نامہ جاری کرتے وقت پٹواریوں کو ایک ٹائم فریم بھی دیا گیا ‘ ریونیو ڈیپارٹمنٹ کے پٹواریوں نے اس اغلاط نامہ میں بھی کمائی کا ذریعہ تلاش کر لیا ‘ فیلڈ سٹاف گزشتہ 7 ماہ سے نہ تو اغلاط نامہ درست کیا اور نہ ہی ریکارڈ بروقت لینڈ ریکارڈ سنٹر میں جمع کرایا‘ سونے پر سہاگہ کے مترادف لینڈ ریکارڈ سنٹر کے عملہ نے بھی پٹواریوں سے اغلاط نامہ طلب نہیں کرتا ‘ معلوم ہوا ہے لینڈ ریکارڈ سنٹر کے ذمہ دار اہلکار بھی محکمہ مال کے پٹواریوں سے مستفید ہونیوالوں میں شامل ہیں ۔ لینڈ ریکارڈ سنٹر کا عملہ تحائف اور نذرانہ لیکر خاموشی ‘ زبان بند کر لیتا ہے ۔ بلاک شدہ مواضعات کا ریکارڈ بروقت نہ کرانے سے ملتان کے ہزاروں شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ اس مشکل صورتحال میں وہ محکمہ مال کے پٹواری سے رابطہ کرتا ہے جو اسے اپریل کے ماہ میں فرد جاری کرتا ہے جس کے بعد سائلین ہر فرد برائے بیعہ ‘ ضمانت اور دیگر ضروریات کیلئے استعمال کرتے ہیں ۔ بورڈ آف ریونیو کے مراسلہ کی رو سے اس طرح کی فرد سراسر غیر قانونی ہے لیکن ضلعی انتظامیہ کا کوئی آفسر اس صورتحال پر توجہ دینے کو تیار نہیں۔ بتایا گیا ہے تحصیل ملتان سٹی ‘ تحصیل ملتان صدر ‘ تحصیل جلالپور پیروالا اور تحصیل شجاعباد میں کے پٹواریوں نے یکم اپریل کے بعد آج تک اپنا روزنامچہ بند نہیں کیا اور نہ ہی ریونیو آفسران روزنامچہ بند کرنے کے حق میں ہیں ‘ لینڈ ریکارڈ سنٹرز کے عملہ کی نااہلی کیوجہ سے یہ محکمہ مال کی تاریخ کا طویل ترین روزنامچہ ثابت ہوا ۔ معلوم ہوا ہے موضع بچ ‘ درانہ لنگانہ ‘ جنگل بیڑہ اور جھکڑ پور کے پٹواری روزانہ کی بنیاد پر ماہ اپریل میں انتقالات درج کر رہے ہیں اور وراثتی تقسیم بھی درج کر رہے ہیں ‘ یہ ساری صورتحال کا متعلقہ آفسران کے علم میں ہے لیکن وہ جان بوجھ کر خاموشی اختیار کر لیتے ہیں ۔ معلوم ہوا ہے صرف تحصیل ملتان سٹی کے بلاک شدہ مواضعات کی فرد ملکیت کی قیمت 10 سے 20 ہزار فی مرلہ وصول کی جا رہی ہے ۔ کمرشل اراضی کے حصول کیلئے مارکیٹ کے حساب سے قیمت وصول کی جا رہی ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر