نامیاتی مادہ زمین کی کیمیائی خصوصیات کو متاثر کرتا ہے،زرعی ماہرین

نامیاتی مادہ زمین کی کیمیائی خصوصیات کو متاثر کرتا ہے،زرعی ماہرین

سلانوالی(اے پی پی )ماہرینِ زراعت نے کہا ہے کہ پودوں کی نشوو نما کیلئے بہتر انداز میں غذائی اجزا ،پانی اور آکسیجن کی ضرورت پوری کرنے اورپودوں کی جڑوں کی نشوونما کے لیے بہتر طبعی خصوصیات کی حامل زمین صحتمند ہونی چاہے تاکہ فصلوں کی اچھی پیداوار حاصل کی جاسکے ،کیونکہ نامیاتی مادہ زمین کی کیمیائی طبعی اور بائیولوجیکل خصوصیات کو متاثر کرتا ہے، زیادہ نامیاتی مادے کی حامل زمین میں زمینی جاندار بیکٹیریا اور فنجائی وغیرہ بہتر انداز میں کیمیائی عوامل سرانجام دیتے ہیں جو زمین کی زرخیزی بڑھانے کا سبب بنتے ہیں ،نامیاتی مادے کا استعمال غیر نامیاتی مادوں کی کارکردگی کو بھی بڑھا دیتا ہے۔

جسکے نتیجہ میں کم خرچہ پرزیادہ پیداوار کا حصول ممکن ہوجاتا ہے، زیادہ نامیاتی مادے والی زمین کی پانی جزب کرنے کی صلاحیت بڑھ جاتی ہے جو خشک سالی کے دوران پودوں کو پانی مہیا کرتی ہے، اس لیے زمین کے اندر نامیاتی مادے کی مقدار بڑھانے کیلئے گوبر کی گلی سڑی کھاد ،پولٹری کھاد ،سبز کھاد اور فصلوں کے بچے ہوئے حصے کا استعمال ضروری ہے، کیمیائی کھادیں نائٹروجن، فاسفورس اور پوٹاش کا متناسب استعمال زمین کی زرخیزی کو بحال رکھنے کے ساتھ ساتھ پیداوار بڑھانے کا سبب بنتا ہے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...