ڈی اے پی کھاد پر رجسٹرڈکاشتکار ہی سبسڈی سکیم سے استفادہ کرنے کے اہل

ڈی اے پی کھاد پر رجسٹرڈکاشتکار ہی سبسڈی سکیم سے استفادہ کرنے کے اہل

لاہور(پ ر)ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے کہا ہے کہ کاشتکاروں کو ڈی اے پی کھادپر سبسڈی کی فراہمی شفاف انداز میں جاری ہے۔شفافیت کو100فیصد یقینی بنانے کیلئے ایسے تمام وؤچرز جو کھاد کی بوریوں کے ساتھ چسپاں نہیں کئے گئے وہ بلاک کر دئے گئے ہیں ۔صرف رجسٹرڈ کاشتکار ہی اس سبسڈی سکیم سے استفادہ حاصل کر سکتے ہیں ۔کاشتکاروں کیلئے رجسٹریشن کے عمل کو نہایت سادہ بنا دیا گیا ہے جس کیلئے کسان صرف محکمہ زراعت پنجاب کے ٹال فری نمبر ز0800-15000یا0800-29000 پر کال کر کے اپنا شناختی کارڈ نمبر ودیگر کوائف بتا کر رجسٹریشن کراسکتے ہیں ۔ترجمان نے مزید کہا کہ رجسٹرڈ کاشتکاروں کے علاوہ کوئی بھی کھاد ڈیلر یا غیرمتعلقہ شخص اس سبسڈی سے ہرگزفائدہ حاصل نہیں کرسکتاکیونکہ یہ سبسڈی وؤچرز شناختی کارڈ نمبر اور تصدیقی میسج کے بغیر کیش نہیں ہوسکتے۔تما م کمپنیوں کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ سبسڈی وؤچرز کھاد کی بوریوں کے ساتھ چسپاں کریں ۔جن کمپنیوں نے حکومت کی اس ہدایت پر عمل نہیں کیا ان کے وؤچرز بلاک کرنے کے علاوہ ان کے خلاف تحقیقات بھی کی جارہی ہیں ۔جب وؤچر کھاد کے تھیلے کیساتھ منسلک ہوگاتو کھاد کے غیر معیاری ہونے کے امکانات بھی ختم ہوجائیں گے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ کھادوں کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤبین الاقوامی منڈیوں کے مطابق ہوتا ہے ۔حکومت پنجاب نے جولائی2017 سے ڈی اے پی کھاد پر سبسڈی کا آغاز کیا اس وقت مارکیٹ میں مختلف کمپنیوں کی ڈی اے پی کھاد کی قیمت 2638سے2670 فی بوری تھی۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...