محکمہ صحت میں 270بوگس ملازمین کا انکشاف ، متعلقہ شعبوں کو بھی نوٹس ارسال

محکمہ صحت میں 270بوگس ملازمین کا انکشاف ، متعلقہ شعبوں کو بھی نوٹس ارسال

لاہور(جاوید اقبال)محکمہ صحت لاہور کے چیف ایگزیکٹو ڈائریکٹوریٹ کے ماتحت دفاتر سے 270 گھوسٹ ملازم پکڑے گئے ہیں یہ ملازمین سالہا سال سے لاکھوں روپے ماہانہ کے حساب سے تنخواہ لے رہے تھے۔ملازمین کا تعلق مختلف ڈسپنسریوں ،فلٹر کلینکس،ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسرز کے دفاتر ڈسٹرکٹ ہسپتالوں اور سی ای او آفس کے مختلف شعبہ جات سے ہے ذرائع کا دعویٰ ہے کہ ان ملازمین کو چیف ایگزیکٹو آفیسر نے شوکاز نوٹس جاری کر دیے ہیں اور کہا ہے کہ جن دفاتر میں یہ ملازم کاغذوں میں حاضریاں لگا کر تنخواہ وصول کرتے تھے انہیں بھی اظہار وجوہ کے نوٹس جاری کیے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ان میں اکثریت ایسے ملازمین کی ہے جن میں جو ارکان اسمبلی مختلف طاقتور شخصیات کے ذاتی ملازموں کا کردار ادا کر رہے تھے اور تنخواہ محکمہ صحت سے وصول کر رہے تھے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ان میں سے زیادہ تر کا تعلق داتا گنج بخش ، راوی، نشتر ور سمن آباد ٹاؤن سے ہے اس حوالے سے سی ای او لاہور سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ ان ملازمین کی تلاش جاری ہے ان کے گھروں کے پتے پر شوکاز نوٹس روانہ کرکے تحقیقات الگ سے شروع کر دی گئی ہیں جس کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے ۔ جن افسروں نے انہیں غائب کر رکھا تھا ان کے خلاف بھی کاروائی ہو گی۔انہوں نے کہا کہ اس میں کسی قسم کا پریشر برداشت نہیں کیا جائے گا میرٹ کے مطابق کاروائی کریں گے۔

بوگس ملازمین

مزید : میٹروپولیٹن 1