پورٹ قاسم پر دوسرے ایل این جی ٹرمینل کا افتتاح ، توانائی چیلنجز پر قابو پانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں : وزیر اعظم

پورٹ قاسم پر دوسرے ایل این جی ٹرمینل کا افتتاح ، توانائی چیلنجز پر قابو پانے ...
 پورٹ قاسم پر دوسرے ایل این جی ٹرمینل کا افتتاح ، توانائی چیلنجز پر قابو پانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں : وزیر اعظم

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی(آئی این پی) وزیراعظم شاہدخاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان میں ترقی کا پہیہ چل رہا ہے، 2013میں حکومت سنبھالی تو بتایا گیا کہ گیس کو نظام میں شامل کرنے کیلئے7سال لگیں گے، پاکستان گیس پورٹ کنسوریشم کے تعاون سے ٹرمینل لگایا گیا ہے، 2013میں حکومت کو توانائی کے بڑے چیلنجز کا سامنا تھا، آئندہ3سال میں ایل این جی کی طلب 30ملین ٹن سے تجاوز کرجائے گی۔شاہد خاقان عباسی نے گزشتہ روز پورٹ قائم پر ایل این جی ٹرمینل کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے جوبھی منصوبہ شروع کیا اسے مکمل کیا ، حکومت خوش قسمت ہے کہ جس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھااور اس کاافتتاح بھی کیا،توانائی چیلنجز پر قابو پانے کیلئے اقدامات کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان گیس پورٹ کنسوریشم کے تعاون سے ٹرمینل لگایا گیا ہے، کنسوریشم میں چین،جاپان، اور یورپ کی کمپنیاں شامل ہیں جبکہ توانائی کے شعبے میں اقبال زیڈاحمد کی خدمات قابل تعریف ہیں۔ 2013میں حکومت کو توانائی میں شامل کرنے کی منصوبہ بندی کی، بجلی کی قلت کے باعث صنعت اور صارفین بری طرح متاثر ہورہے تھے، گیس کی کمی کے باعث کھاد کے کارخانے اور گھریلو صارفین کو گیس کی کمی کا سامنا تھا، دوسرے ایل این جی ٹرمینل کی تنصیب سے ہمیں وافر گیس مہیا ہوگی، گیس سے چلنے والے3 بجلی گھر جلد کام شروع کردیں گے، ملک میں گیس سے بجلی پیدا کرنے والے مزید بجلی گھربھی لگ رہے ہیں، گیس پلانٹس، سی این جی، اور صنعتی ضرورتوں کے باعث گیس کی طلبی ایک بی سی ایف ہے،آئندہ30سال میں ایل این جی کی طلب 30ملین ٹن سے تجاویز کرجائے گی۔توقع ہے کہ ملک میں مزید ایل این جی ٹرمینلزلگیں گے، ایل این جی ٹرمینلز کے شعبے میں سرمایہ کاری وسیع مواقع ہے، پہلے اور دوسرے ایل این جی ٹرمینل کیلئے حکومت نے کوئی ساوران گارٹنی نہیں دی، حکومت کاکام کاروبار کرنا نہیں، بلکہ ریگولیٹری فریم ورک فراہم کرنا ہے۔ ملک میں ٹرمینلز اپنی مکمل صلاحیت کے ساتھ کام کررہے ہیں۔ رواں سال پاکستان میں شرح نمو5.3فیصد جبکہ آئندہ سال 6 فیصد رہنے کے توقع ہے،پاکستان ترقی کررہا ہے، اور صنعت کا پہیہ چل رہا ہے، پاکستان میں ایل این جی سب سے سستا ایندھن ہے،انھوں نے کہا کہ مختلف ذرائع سے بجلی کی پیداوار پر توجہ دے رہے ہیں، 360میگاواٹ کے کول پاورپلانٹ کا حتمی مرحلہ مکمل ہونے کو ہے، کوئلے سے بجلی پیداکرنے والے مزید بجلی گھر میں لگ رہے ہیں۔بعدازاں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے ملاقات کی جس میں صوبے میں جاری وفاقی ترقیاتی منصوبوں اور مجموعی صورتحال پر گفتگو کی گئی اور سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ملاقات میں گورنر سندھ محمد زبیر بھی موجود تھے۔دریں اثنا ء بچوں کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ بچے کسی بھی قوم کا قیمتی اثاثہ اور روشن مستقبل کی ضمانت ہیں ،بچوں کی تعلیم و تربیت سلامتی اور صحت کے حوالے سے ذمہ داریوں سے آگاہ ہیں لہٰذابچوں کے تحفظ کیلئے موجودہ قانون سازی کو مضبوط اور نئے قوانین وضع کئے جا رہے ہیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ سول سوسائٹی اور نجی شعبے کے تعاون سے بچوں کی فلاح و بہبود کو یقینی بنائے گی۔

وزیراعظم

مزید : صفحہ اول