جدید تحقیق سے ہی زراعت کے شعبہ کی بحالی ممکن ہے : حاجی محمد اکرام انصاری

جدید تحقیق سے ہی زراعت کے شعبہ کی بحالی ممکن ہے : حاجی محمد اکرام انصاری

ملتان ( سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیر مملکت برائے کامرس اینڈ ٹیکسٹائل حاجی محمد اکرم انصاری نے کہا ہے کہ موسمی تبدیلیاں بارشوں میں بے قاعدگی ، پانی کی کمی اور ماحولیاتی اثرات ہماری فصلوں کو متاثر کررہے ہیں فصلا ت ، سبزیات اور باغات میں نت نئی بڑھتی ہوئی بیماریاں ہماری زراعت کی زبوں حالی کی وجہ ہے. جدید تحقیق کی بدولت ہم زراعت کو مشکلات سے نکال کر بحالی کی طرف لاسکتے ہیں. زراعت ہماری معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت (بقیہ نمبر48صفحہ12پر

رکھتی ہے. ہماری صنعت کا انحصار زراعت پر ہے . زراعت ترقی کرے گی تو صنعت کا پہیہ چلے گا. جو بھی نئی تحقیقات سامنے آرہی ہیں وہ کاشتکاروں تک پہنچنی چاہئیں تاکہ وہ اس سے مستفید ہوسکیں. انہوں نے ان خیالات کا اظہار بہاء الدین زکریایونیورسٹی ملتان کے شعبہ پلانٹ پتھالوجی کے زیراہتمام چھٹی انٹرنیشنل کانفرنس بعنوان ’’پودوں کی صحت زراعت کی بقا کی ضامن ہے ‘‘میں کیا. اس موقع پر قائم مقام وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر بشیر احمد چوہدری ، چیئرپرسن شعبہ پلانٹ پتھالوجی پروفیسر ڈاکٹر راشدہ عتیق ، غیرملکی سائنسدان پروفیسر ڈاکٹر وسنتا کمارا ، پروفیسر ڈاکٹر شی فینگ وانگ چائنا، پروفیسر ڈاکٹر منیر ابوحیدر کنیڈا، پروفیسر محمد ارشد جاوید ملائیشیاء، پروفیسر ہارپندر سنگھ رندھاوا کینیڈا اور پروفیسر ڈاکٹر ڈینس امریکہ ، سنٹرل کاٹن ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر زاہد محمود ، الہ دین گروپ آف کمپنیز کے چیئرمین حاجی عطاء الرحمن ، ڈائریکٹر انسٹی ٹیوٹ آف فوڈ سائنس و اورک ڈاکٹر سعید اختر ، چیئرمین شعبہ علوم اسلامیہ ڈاکٹر عبدالقدوس صہیب ، ممبر سنڈیکیٹ آمنہ حسنین نقوی بھی موجود تھیں.وفاقی وزیر مملکت برائے کامرس اینڈ ٹیکسٹائل حاجی محمد اکرم انصاری نے مزید کہا کہ زراعت کی ترقی اسی صورت ممکن ہے جب براہ راست کاشت کاروں تک سہولیات پہنچائی جائیں گی . موجودہ حکومت نے کاشت کاروں کی فلاح کے لیے بہت سے منصوبے شروع کئے جن میں کھادوں میں سب سڈی ، ٹیوب ویلز کی بجلی کے ٹیرف میں کمی ، رابطہ سڑکوں کی بحالی اور مرمت ، سب سڈی پر زرعی مشینری کی فراہمی و دیگر منصوبے شامل ہیں. مگر اس کے باوجود کاشت کاروں کے لیے مزید کام کرنے کی ضرور ت ہے. انہوں نے کہاکہ امپورٹڈ بیج کی درآمد پر سب سڈی دینے پر غور کیاجارہا ہے. انہوں نے مزید کہاکہ موسمی تبدیلیوں سے بچنے کے لیے ہمیں شجرکاری پر خصوصی توجہ دینی ہوگی. میں یہ سمجھتا ہوں کہ ایسا قانون بنایا جائے کہ جو شخص ایک درخت کاٹے اس کے بدلے اسے دس درخت لگانے پڑیں.کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قائم مقام وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر بشیر احمد چوہدری نے کہاکہ ملک کی ۶۴ فی صد آبادی دیہات میں رہتی ہے اور ان کا روزگار براہ راست زراعت سے منسلک ہے . کانفرنس کے ثمرات کسانوں تک پہنچنے چاہئیں تاکہ وہ جدید دور کے تقاضوں سے ہم آہنگ ہوسکیں اور ملکی ترقی میں اپنا کردار ادا کرسکیں. کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرپرسن پروفیسر ڈاکٹر راشدہ عتیق نے کہاکہ انٹرنیشنل کانفرنس کروانے کا مقصد یہ ہے کہ پاکستان کے کاشت کاروں کے مسائل حل کرنے کے لیے اقدامات کیے جائیں. یونیورسٹیز اور تحقیقی ادارے زراعت کی ترقی کے لیے شب و روز کوشاں ہیں. تاکہ ہم اپنی زراعت درپیش چیلنجز سے نبردآزما ہوسکیں. ہمارا کاشت کار خوشحال ہوگا. تو ملک خوشحال ہوگا. ہماری پوری کوشش ہے کہ ہم ایسے زرعی ماہرین تیار کریں جو زراعت کی ترقی میں اہم کردار ادا کرسکیں. سنٹرل کاٹن ریسرچ انسٹیو ٹ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر زاہد محمود کا کہنا تھا کہ ہر مشکل وقت میں کاشت کاروں کے ساتھ کھڑے ہیں اور کپاس کے مسائل حل کرنے میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کریں گے.کپاس ہمیں سب سے زیادہ زرمبادلہ دینے والی فصل ہے اور اچھی قوت مدافعت والی کپاس کی اقسام پر تحقیق جاری ہے تاکہ کپاس کو درپیش مسائل احسن طریقہ سے حل کیے جاسکیں .پاکستان فائٹو پتھالوجیکل سوسائٹی کے صدر پروفیسر ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہاکہ کانفرنس کے انعقاد سے جنوبی پنجاب کے کاشت کاروں کو زراعت سے متعلقہ جدید طریقہ کار اور تحقیقات سے آگاہی ہوگی. افتتاحی تقریب کے اختتام پر وفاقی وزیر مملکت حاجی محمد اکرم انصاری نے قائم مقام وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر بشیر احمد چوہدری ، چیئر پرسن شعبہ پلانٹ پتھالوجی ڈاکٹر راشدہ عتیق ، حاجی عطاء الرحمن کو یادگاری شیلڈز دیں. وفاقی وزیر مملکت حاجی محمد اکرم انصاری کو قائم مقام وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر بشیر احمد چوہدری نے شیلڈ پیش کی.اس موقع پر عتیق الرحمن ، ایم محمود اختر ، آصف مجید کو ایوارڈز دیے گئے. کانفرنس کے آرگنائزر ڈاکٹر سمعیہ محمود خان ، ڈاکٹر ثوبیہ چوہان ، ڈاکٹر عتیق الرحمن ، ڈاکٹر عمادالدین ، ڈاکٹر محمد عابد ، ڈاکٹر محمد نعمان ، ڈاکٹر تیمور شکیل ، ڈاکٹر محمد ساجد ،سید عاطف حسن نقوی ، محسن عالم تھے.

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...