توانائی بحران پر قابو پانے کیلئے عملی اقدامات کر رہے ہیں،کراچی میں مکمل قیام امن تک آپریشن بل تفریق جاری رہے گا:وزیر اعظم

توانائی بحران پر قابو پانے کیلئے عملی اقدامات کر رہے ہیں،کراچی میں مکمل ...

کراچی (اسٹاف رپورٹر)وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاہے توانائی بحران پر قابو پانے کیلئے عملی اقدامات کر رہے ہیں،حکومت نے جو بھی منصوبہ شروع کیا اسے تکمیل تک پہنچایاہے۔ گیس سے چلنے والے تین بجلی گھر جلد کام شروع کریں گے ،رواں سال پاکستان کی شرح نمو5.3فیصدرہی،آئندہ سال یہ شرح6فیصدتک پہنچ جائے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیرکو پورٹ قاسم پر ایل این جی ٹرمینل کے افتتاح کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر گورنرسندھ محمدزبیر اور دیگراعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ 2013میں جب حکومت سنبھالی تو ملک میں توانائی کا شدید بحران تھا،جس پر قابو پانے کیلئے گیس کو نظام میں شامل کرنے کی منصوبہ بندی کی ۔پاکستان گیس پورٹ کنسورشیم کے تعاون سے ٹرمینل لگایااوراقبال زیڈ احمد نے جانفشانی سے ٹرمینل کے منصوبے کو مکمل کیا۔ اس کنسوشیم میں چین ، جاپان اور یورپ کی کمپنیاں شامل ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ایل این جی سب سے سستا ایندھن ہے ۔ ہم مختلف ذرائع سے بجلی حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں اور توانائی کی طلب کو پورا کرنے کے لیے منصوبوں کو مکمل کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بجلی کی قلت کے باعث صارفین اور صنعتیں متاثرہورہی تھیں،اورکھادکے کارخانے اور گھریلو صارفین کو گیس کی کمی کا سامناتھا،گیس سے چلنے والے تین بجلی گھر جلد کام شروع کردیں گے۔۔ انہوں نے کہا دوسرے ایل این جی ٹرمینل کی تنصیب سے ہمیں وافر گیس مہیا ہو گی، ملک میں گیس سے بجلی پیدا کرنے والے مزید بجلی گھر بھی لگ رہے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا گیس پلانٹس، سی این جی اور صنعتی ضرورتوں کے باعث گیس کی طلب ایک پی سی ایف ہے، آئندہ 3 سال میں ایل این جی کی طلب 30 ملین ٹن سے تجاوز کر جائے گی۔ انہوں نے کہا توقع ہے کہ ملک میں مزید ایل این جی ٹرمینلز لگیں گے، اس کے شعبے میں سرمایا کاری کے وسیع مواقع ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کا کام کاروبار کرنا نہیں بلکہ ریگولیٹری فریم ورک فراہم کرناہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں صوبوں میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں اور ایل این جی میں بہت زیادہ سرمایہ کاری ہو سکتی ہے ۔ سرمایہ کار ایل این جی سمیت مختلف شعبوں میں پاکستان آ کر سرمایہ کریں ۔ حکومت انہیں ہر ممکن مراعات اور تحفظ فراہم کرے گی ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ کوئلے سے تعمیر ہونے والا 360 میگاواٹ بجلی گھر کا منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے ۔ اس کے علاوہ مزید بجلی گھر تعمیر کیے جا رہے ہیں ۔ ان بجلی گھروں کی تکمیل سے توانائی کا بحران ختم ہو جائے گا ۔ پاکستان ترقی کر رہا ہے ۔ صنعت کا پہہ چل رہا ہے ، امن و امان بہتر ہونے کی وجہ سے ملک کی معیشت بہتر ہو رہی ہے ۔ حکومت تاجروں اور صنعت کاروں کے ماحول دوست تجارتی پالیسی تیار کی ہے ۔ تاجر اس پالیسی سے استفادہ کریں ۔ حکومت کی کوششوں سے پاکستان کا معاشی نظام بہتر ہو رہا ہے اور معاشی اہداف حاصل کرنے کی مکمل کوشش کر رہے ہیں ۔ رواں سال پاکستان کی شرح نمو 5.3 فیصد رہی جبکہ آئندہ برس یہ شرح 6 فیصد تک پہنچ جائے گی ۔

کراچی (اسٹاف رپورٹر)وزیراعظم شاہدخاقان عباسی سے وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے پیرکی صبح گورنرہاؤس میں ملاقات کی اور ناشتہ ایک ساتھ کیا۔اس موقع پر گورنرسندھ محمدزبیربھی موجود تھے۔وزیر اعلی سندھ نے وزیراعظم کوایپکس کمیٹی کے فیصلوں اوراس پر عملدرآمد سے متعلق آگاہ کیا۔تینوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات تقریباًپونے دو گھنٹے جاری رہی۔ملاقات میں صوبہ کی صورتحال،امن و امان ، وفاق کے تحت جاری منصوبوں میں ہونے والی پیش رفت، معاشی ، اقتصادی اور تجارتی سرگرمیوں سمیت اہمیت کے حامل دیگر امورپر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ملاقات کے دوران وزیر اعظم نے کہا کہ کراچی میں مکمل قیام امن تک آپریشن بلاتفریق جاری رکھا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ وفاق پورے ملک کی یکساں ترقی کے وژن پر گامزن ہے، عوام کی جان و مال کا تحفظ اور انھیں ہر قسم کی سہولیات کی فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ کراچی امن و امان کی صورت حال کو مزید بہتر بنانے کے لیے وفاقی حکومت سندھ حکومت کے ساتھ مکمل تعاون کر رہی ہے ۔ جبکہ سندھ کی ترقی کے لیے بھی وفاق ہر ممکن تعاون کرے گاجبکہ تینوں رہنماؤں کے درمیان سیاسی صورت حال پر بھی گفتگو کی گئی ۔ترجمان وزیر اعلی ہاؤس کے مطابق وزیراعظم سے ملاقات کے دوران وزیراعلیٰ نے ایپکس کمیٹی کے فیصلوں اور اس پر عملدرآمد سے متعلق آگاہ کیا جبکہ کراچی میں آپریشن اور امن کی صورتحال سے بھی آگاہ کیا۔وزیراعلی نے وزیراعظم کو کے سی آر سے متعلق رکاوٹوں کے بارے میں بھی بتایا۔

مزید : کراچی صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...