سی پیک کی تیاریوں کا معیار بھی بلندہونا چاہئے،پرویزخٹک

سی پیک کی تیاریوں کا معیار بھی بلندہونا چاہئے،پرویزخٹک

پشاور(این این آئی)خیبرپختونخواکے وزیراعلیٰ پرویزخٹک نے کہا ہے کہ سی پیک پورے خطے کا شاندار گیم چینجر منصوبہ ہے جس کیلئے تیاریوں کا معیار بھی اتنا ہی اونچاہونا چاہئے اس مقصد کیلئے ہماری صوبائی حکومت نے بھرپور تیاریاں شروع کی ہیں اور ٹھوس اقدامات کئے جا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی سی پیک کا انتہائی کارآمد شعبہ ہے جس کی بدولت ہم باقی تمام شعبوں میں اپنی پیداوری صلاحیت کو کئی گنا زیادہ بڑھا سکتے ہیں ہماری جامعات اور اعلیٰ تعلیم کے دیگر اداروں کو انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ماہرین کی تیاری پر بھرپور توجہ دینے کی ضرورت ہے جو سافٹ اور ہارڈوئیر کے علاوہ الیکٹرانکس، ٹیلی وموبائل کمیونیکیشن اور دیگر تمام امور پر مکمل دسترس رکھتے ہوں اور سی پیک و نان سی پیک تمام ترقیاتی سکیموں اور شعبوں کو دن دگنی رات چوگنی فروغ دے سکیں انہوں نے نوجوان نسل پر بھی زور دیا کہ دیگر شعبوں کے علاوہ انفارمیشن ٹیکنالوجی میں بھی اعلیٰ مہارت حاصل کریں تاکہ وہ قوم کے روشن مستقبل کو یقینی بنا سکیں وہ ایڈورڈ کالج پشاور میں آئی ٹی انفراسٹرکچر کے نئے شعبے کی افتتاحی تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے تقریب سے کالج کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر نیئر فردوس اور دیگر ماہرین تعلیم نے بھی خطاب کیا ۔انہوں نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے نئے رجحانات اور کالج کے مختلف تاریخی پہلوؤں پر روشنی ڈالنے کے علاوہ تعلیم کے شعبے میں انقلابی اصلاحات پر صوبائی حکومت کے اقدامات کو سراہا اور اپنے بھر پورتعاون کا یقین دلایا تقریب میں کالج اور ذیلی تعلیمی اداروں کے اساتذہ اور طلباء و طالبات کی کثیر تعداد کے علاوہ صوبائی مشیر برائے اعلیٰ تعلیم مشتاق غنی نے بھی شرکت کی اس موقع پر وزیراعلیٰ نے کالج میں بی ایس آئی ٹی شعبہ کے منتظمین کو شیلڈز بھی دیں پرویز خٹک نے کہا کہ صوبائی حکومت شروع دن سے تعلیم کے دیگر شعبوں کے ساتھ ساتھ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی ترقی پر بھی خصوصی توجہ دے رہی ہے کیونکہ ہم اسے نظام کی تبدیلی اور شفافیت لانے کا ذریعہ سمجھتے ہیں اس مقصد کیلئے خطیر فنڈز مختص کئے گئے اور کئی منصوبے شروع کئے گئے جن میں 60 کروڑ روپے کی لاگت سے انفارمیشن اینڈ کمیونیکیشن ٹیکنالوجی سنٹر کا قیام، 25 کروڑ روپے کی لاگت سے بے روزگار آئی ٹی گریجویٹس کیلئے اعلی تربیتی مرکز کا قیام ، 20 کروڑ روپے کی لاگت سے شعبہ صحت اور غریب تک علاج کی سہولیات پہنچانے میں آئی ٹی کا استعمال ، 14 کروڑ روپے کی لاگت سے خواتین کیلئے آئی ٹی تربیتی سہولیات کی فراہمی، 11 کروڑ روپے کی لاگت سے سرکاری سکولو ں میں شمسی توانائی کے ذریعے آئی ٹی لیبز کا قیام اور دوسری ان گنت سکیمیں قابل ذکر ہیں انہوں نے کہا کہ نیاخیبر پختونخوانئی سڑکوں، پلوں اور اونچی عمارات سے نہیں بلکہ مستحکم نظام اور اداروں کی مضبوطی سے ممکن ہے جس کیلئے پی ٹی آئی کی حکومت شروع دن سے کوشاں ہے ہم عوام کو قانون ، میرٹ اور انصاف کی بالادستی پر مبنی شفاف نظا م دینا چاہتے ہیں تاکہ ہماری نوجوان نسل کو ترقی کے بھر پور مواقع ملیں انہوں نے ایڈورڈز کالج پشاور کو صوبے کا تاریخی علمی ورثہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس ادارے کے طلباء نے تحریک پاکستان سے لیکر ملکی تاریخ کے ہر مرحلے پر قومی تعمیر وترقی میں نمایاں کردار ادا کیا ہے اور زندگی کے تمام شعبوں میں عمدہ خدمات انجام دی ہیں جس کا قومی اور بین الاقوامی سطح پر اعتراف بھی ہوا ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر