کورکمانڈر حملہ کیس، سزا کے خلاف اپیل پر آگاہی نوٹسز جاری

کورکمانڈر حملہ کیس، سزا کے خلاف اپیل پر آگاہی نوٹسز جاری

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ نے کور کمانڈر حملہ کیس میں سزا کے خلاف اپیل پر دہشت گردوں کو آگاہی نوٹسز جاری کردیئے۔ پیر کو سندھ ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ کے روبرو کور کمانڈر حملہ کیس میں کالعدم تنظیم کے دہشت گردوں کی سزا کیخلاف اپیل کی سماعت ہوئی۔ پراسیکیوٹر نے بتایا کہ مجرم کے اہلیخانہ عدالتی نوٹس وصول نہیں کررہے۔ عدالت نے کالعدم تنظیم کے دہشت گردوں کو ایک بار پھر آگاہی نوٹس جاری کردیے۔ مجرم کے اہلیخانہ کی جانب سے نوٹس کا جواب نا دیا گیا تو اپیل پر فیصلہ جاری کردیں گے۔ ساتھی وکیل نے بتایا کہ مجرموں کے وکیل ایم آر سید کا انتقال ہوچکا۔ عدالت نے مقدمہ میں گرفتار کور کمانڈر حملہ کیس میں سزا یافتہ 11 دہشت گردوں کو حیدرآباد سے پیش نہ کرنے پر سیکریٹری داخلہ کو شوکاز نوٹس بھی جاری کرچکی ہے۔ پراسیکیوٹر نے کہا کہ حیدرآباد جیل انتطامیہ کی جانب سے احکامات کے باجود جواب جعع نہیں کرایا گیا۔ وکیل نے بتایا کہ تمام مجرموں کو سیکیورٹی خدشات کے باعث حیدر آباد منتقل کردیا تھا۔ 11 ملزمان میں عطا الرحمان عرف ابراہیم، شہزاد باجوہ ، یعقوب، عذیر احمد، شعیب صدیقی اور دانش امام شامل ہیں۔ نجیب اللہ، خرم سیف اللہ، شہزاد مختیار، خالد راو اور عدنان شاہ بھی 11 مجرموں میں شامل ہیں۔ مجرموں نے 2004 میں گلستان جوہر تھانے پر حملہ کیا تھا۔ حملے میں ایس آئی سمیت 5 اہلکار جاں بحق ہوئے۔ گرفتار مجرموں کو 2006 میں کور کمانڈر احسن سلیم حیات پر حملے میں سزائے موت دی جاچکی ہے۔

مزید : کراچی صفحہ آخر