ذیابیطس کا عالمی دن منانے کا مقصدآگاہی پیدا کرنا ہے،صمد شیرا

ذیابیطس کا عالمی دن منانے کا مقصدآگاہی پیدا کرنا ہے،صمد شیرا

کراچی (اسٹاف رپورٹر) نومبر کے ماہ میں ذیابیطس کا عالمی دن منانے کا مقصد ذیابیطس کی بڑھتی ہوئی شرح پر قابو پانے کے لئے مرض ذیابیطس اور اس کے بچاؤ اور پیچیدگیوں کے بارے میں عوام الناس میں آگاہی و بیداری پیدا کرنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ڈائی بیٹک ایسوسی ایشن آف پاکستان کے جنرل سیکریٹری پروفیسر صمد شیرا نے سیمینار سے اپنے خطاب میں کیا ۔انہوں نے کہا کہ عالمی سطح پر یہ مرض بڑی تیزی سے بڑھتا جارہا ہے اگر اس کا تدارک نہ کیا تو 2040 تک یہ تعداد 642 ملین سے بھی تجاوز کرسکتی ہے ۔ پاکستان میں بھی صورتحال مختلف نہیں اس وقت سات ملین افراد اس مرض میں مبتلا ہیں ۔لہذا ڈاکٹروں سے مشورہ کے مطابق احتیاط کی جانی چاہیں۔ اس موقع پر بقائی انسٹی ٹیوٹ آف ڈایابیٹکس اینڈ کروئنالوجی کے پروفیسر آف میڈیسن اور ماہر ذیابیطس پروفیسر عبدالباسط نے کہا کہ پاکستان میں 20 سال سے زیادہ عمر والے 26.3 فیصد افراد ذیابیطس کا شکار ہیں ۔جن میں موٹاپا اور بلند فشار خون کے مریض بڑھ رہے ہیں ۔یہ اعداد و شمار پاکستان میں خطرناک ہے ۔ لہذا ذیابیطس کی شرح اور اس کے نتیجے میں ہونے والی ممکنہ پیچیدگیوں کو فوری طور پر روکنا ضروری ہے۔ اس کے لئے بروقت تشخیص موجود ہیں ۔جنہیں ہمیں کنٹرول کرنا ہوگا۔

مزید : کراچی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...