آمروں کے دور میں آئین میں تجاوزات کی گئیں، چند لوگوں کو 21 کروڑ کے فیصلے کرنے کا اختیار نہیں دیں گے: سعد رفیق

آمروں کے دور میں آئین میں تجاوزات کی گئیں، چند لوگوں کو 21 کروڑ کے فیصلے کرنے ...
آمروں کے دور میں آئین میں تجاوزات کی گئیں، چند لوگوں کو 21 کروڑ کے فیصلے کرنے کا اختیار نہیں دیں گے: سعد رفیق

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ ہم یہ سمجھتے ہیں پاکستان میں سیاسی جماعتوں کی قیادت کے فیصلے کا اختیار چند لوگوں کو نہیں بلکہ اس جماعت کے کارکنوں کو حاصل ہے، آمروں کے دور میں آئین پاکستان میں بے پناہ تجاوزات کی گئیں ، چند لوگوں کو 21 کروڑ کے فیصلے کرنے کا اختیار نہیں دیں گے۔

ڈاکٹر شاہد مسعود کے سعید غنی پر الزامات، رہنماءپیپلز پارٹی نے صحافی کے خلاف سوشل میڈیا مہم اور ان کے دفتر کے سامنے پریس کانفرنس کرنے کا اعلان کردیا

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ سابق صدر جنرل (ر)پرویز مشرف نے بے نظیر اور نواز شریف کو پارٹی صدارت سے ہٹانے کے لئے جبراً اس کو قانون کا حصہ بنایا ہم اس تجاوزات کو ہٹانا چاہتے ہیں۔ یہ کام آج نہیں 2014ءمیں شروع ہوا اور جب یہ کام مکمل ہوگیا تو پھر اچانک سیاستدانوں کے مزاج اورانداز بدلے یا کسی کے کہنے پر یہ کرنے جارہے ہیں۔ ہم یہ سمجھتے ہیں پاکستان میں سیاسی جماعتوں کی قیادت کا فیصلہ اس کے کارکن کریں گے۔ چند لوگوں کو 21 کروڑ کے فیصلے کرنے کا اختیار نہیں دیں گے۔ یہ وہ جنگ ہے جو محض مسلم لیگ (ن) ہی نہیں لڑ رہی بلکہ پیپلز پارٹی ‘ جماعت اسلامی اور ایم کیو ایم نے بھی لڑی ہے۔ یہ جمہوریت کی جنگ ہے اور اس کو منتقی انجام تک پہنچاکر دم لیں گے۔صد افسوس کہ ملک میں جمہوریت کو آگے بڑھنے نہیں دیا جارہا ہے۔ سعد رفیق کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے آباﺅ اجداد نے اس کے لئے اپنی جانیں دیں۔یہ وقت ہم سے پہلے بی بی پر آیا اور تمام سیاسی جماعتیں اس وقت سے گزری ہیں ، انہوں نے بہت بھگتا اب ہم بھگت رہے ہیں۔ وقت کی پکار کو اور جمہور کی آوازکو سنیں، خدارا پارلیمنٹ مائنس کرنے کا مل کر مقابلہ کریںاور ایسے قانون بنانے سے گریز کریں جو پاکستان میں جمہوریت کو نہ پنپنے دے۔

مزید : قومی /اہم خبریں