معاشرے میں خواتین کے معاشی کردار کو نظر انداز کیا گیا،پروفیسر قبلہ ایاز

  معاشرے میں خواتین کے معاشی کردار کو نظر انداز کیا گیا،پروفیسر قبلہ ایاز

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل پروفیسر ڈاکٹر قبلہ ایاز نے کہاہے کہ معاشرے میں خواتین کے معاشی کردار کو نظر انداز کیا گیاہے،پاکستان میں صنفی تقسیم کی مکمل تصویر موجود نہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب یونیورسٹی ادارہ علوم اسلامیہ میں ہائر ایجوکیشن کمیشن کی قائم کردہ سیرت چیئر،جینڈر سٹڈیزاور ویمن رائٹس کے زیر اہتمام ’سیرت طیبہ اور پاکستان میں خواتین کو درپیش مسائل‘کے موضوع پر دوروزہ بین الاقوامی سیرت النبی کانفرنس کی افتتاحی تقریب سے شیخ زائد اسلامک سنٹر کے آڈیٹوریم میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر نیازاحمد اختر، چیئرمین اقبال ٹرسٹ برطانیہ ڈاکٹر محمد عارف خان، ڈین فیکلٹی آف اسلامک سٹڈیزپروفیسرڈاکٹرمحمد حماد لکھوی،چیئرپرسن سیرت چیئر ڈاکٹر شاہدہ پروین، فیکلٹی ممبران، مذہبی سکالرز اور طلباؤ طالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اپنے خطاب میں ڈاکٹر قبلہ ایاز نے کہا کہ دنیا میں صنف کے کردار پر ابہامات موجود ہیں جن کی علمی وضاحت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین نے عصر حاضر میں علمی معیشت، شعبہ زراعت اور صنعتی انقلاب میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین مردوں کے روزمرہ کاموں میں ہاتھ بٹاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ہم لڑکیوں سے زیادہ لڑکوں پر توجہ دیتے ہیں۔

 ڈاکٹر قبلہ ایازنے کہا کہ پاکستان میں ایک خاص طبقے بالخصوص شہری خواتین کے حقوق کے لئے آواز اٹھائی جاتی ہے اور بنیادوں انسانی حقوق سے محروم دیہاتی خواتین کو نظر انداز کیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی یونیورسٹیوں میں بی ایس کی سطح پر مخلوط تعلیم دینے میں مسائل کا سامنا ہے جس کیلئے مرداور خواتین میں اخلاقی اقدار کو اپنانے کیلئے شعور اجاگر کرنے کی ضرورت ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1