تین روزہ پیس فلم فیسٹیول کا آغاز خوش آئند ہے، شوبز شخصیات

تین روزہ پیس فلم فیسٹیول کا آغاز خوش آئند ہے، شوبز شخصیات

  



لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچر (پِلاک)، محکمہ اطلاعات و ثقافت، پنجاب اور ایشیاء پیس فلم فیسٹیول کے اشتراک سے دنیا بھر سے موصول شدہ مختصر فلموں کی سکریننگ انتہائی خوش آئند ہے اس قسم کے فیسٹول سے نئے فلم میکرز کے جذبوں کی حوصلہ افزائی ہوگی۔فیسٹول کے انعقاد کے لئے حکومت پنجاب کے محکمہ ثقافت کے ساتھ ساتھ ڈی جی پلاک ثمن رائے بھی مبارکباد کی مستحق ہیں۔یاد رہے کہ یہ تین روزہ فیسٹول کل اختتام پذیر ہوجائے گا گا۔ایشیاء پیس فلم فیسٹیول میں فلم سے متعلق کلاسیں، فلموں کی سکریننگ اور فلم کے مختلف موضوعات پر مکالمہ ہوگا۔ فیسٹیول کا افتتاح ڈائریکٹر جنرل پِلاک ثمن رائے نے پنجاب آڈیٹوریم، پنجابی کمپلیکس نزد قذافی اسٹیڈیم کیا۔شاہد حمید،معمر رانا،مسعود بٹ،حسن عسکری،شانسید نور،میلوڈی کوئین آف ایشیاء پرائڈ آف پرفارمنس شاہدہ منی،صائمہ نور،میگھا،ماہ نور،انیس حیدر،ہانی بلوچ،یار محمد شمسی صابری،سہراب افگن،ظفر اقبال نیویارکر،عذرا آفتاب،حنا ملک،انعام خان،فانی جان،عینی طاہرہ،عائشہ جاوید،میاں راشد فرزند،سدرہ نور،نادیہ علی،شین،سائرہ نسیم،صبا ء کاظمی،،سٹار میکر جرار رضوی،آغا حیدر،دردانہ رحمان،ظفر عباس کھچی،سٹار میکر جرار رضوی،ملک طارق،مجید ارائیں،طالب حسین،قیصر ثنا ء اللہ خان،مایا سونو خان،عباس باجوہ،مختار چن،آشا چوہدری،اسد مکھڑا،وقا ص قیدو، ارشدچوہدری،چنگیز اعوان،حسن مراد،حاجی عبد الرزاق،حسن ملک،عتیق الرحمن،اشعر اصغر،آغا عباس،صائمہ نور،خرم شیراز ریاض،خالد معین بٹ،مجاہد عباس،ڈائریکٹر ڈاکٹر اجمل ملک،کوریوگرافر راجو سمراٹ،صومیہ خان،حمیرا چنا،اچھی خان،شبنم چوہدری،محمد سلیم بزمی،سفیان،عینی رباب،حمیرا،عائزہ خان،صباء چوہدری،عبادہ بیگ،گلناز،اظہر ملک،انوسنٹ اشفاق،استاد رفیق حسین،فیاض علی خاں،پروڈیوسر شوکت چنگیزی،ظفر عباس کھچی،ڈی او پی راشد عباس،پرویز کلیم،نیلم منیر خان اور نجیبہ بی جی نے کہا کہ فیسٹیول میں شامل فلموں کو سکریننگ کے بعد ایوارڈز سے بھی نوازا جائے گااس بات میں کوئی دورائے نہیں ہے کہ ایوارڈ کسی بھی شخص کیلئے حوصلہ افزائی کا باعث ہوتا ہے ہمیں امید ہے کہ مستقبل میں بھی ایسے فیسٹول منعقد ہوتے رہیں گے۔فیسٹیول میں شرکت کے لئے دعوت عام ہے۔

مزید : کلچر