زائدپیداواری لاگت کے باعث صنعتیں مشکلات کاشکار ہوگئیں‘ نکاٹی

زائدپیداواری لاگت کے باعث صنعتیں مشکلات کاشکار ہوگئیں‘ نکاٹی

  



کراچی (این این آئی)نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری (نکاٹی) کے سرپرست اعلیٰ کیپٹن اے معیز خان اور صدر نسیم اختر نے ملک کے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں کمی کے ساتھ برآمدات کو فروغ دینے کے اقدامات پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کوکم کرنے کے ساتھ ساتھ اس بات پر توجہ دے کہ ہم اپنی برآمدات بڑھا کرآئندہ کے لیے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو کم کرسکیں۔نکاٹی کے رہنماؤں نے ایک بیان میں کہاکہ ٹیکسوں کی بھرمار اور زائد لاگت کی وجہ سے صنعتوں کے لیے پیداواری سرگرمیاں جاری رکھنا انتہائی مشکل ہوگیا ہے خصوصاً ٹیکسوں پر ٹیکس عائد کر کے حکومت نجانے کس طرح ملکی برآمدات کو فروغ دینے کی خواہش مند ہے جو کہ صنعتکار برادری کی سمجھ سے بالا تر ہے۔

حکومت کو چاہیے ک ملکی برآمدات میں اضافے کے لیے بھی مؤثر حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے صنعتوں کو ریلیف فراہم کرے۔ انہوں نے مزید کہاکہ گزشتہ4ماہ سے سیلز ٹیکس ریفنڈ کی ادائیگی نہ ہونے سے برآمدکنندگان کا خطیر سرمایہ ایف بی آر کے پاس پھنس کر رہ گیا ہے حالانکہ حکومت نے یہ وعدہ کیا تھا کہ سیلز ٹیکس ریفنڈ کی جلد از جلد ادائیگی ممکن بنائی جائے گی مگر حکومت ایسا کرنے میں ناکام رہی جس سے برآمدکنندگان کے پاس سرمائے کی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے۔انہوں نے کہاکہ صنعتوں کو زیادہ سے سہولتیں اور ٹیکسوں میں ریلیف دے کر ہی ملکی برآمدات کا فروغ ممکن ہے مگر حکومت نے ان حقائق کے باوجود صنعتوں کو ریلیف دینے کے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے بلکہ مزید مشکلات پیدا کی جارہی ہیں جو کہ صنعتکار برادری کے لیے انتہائی تشویش کا باعث ہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں کمی کے ساتھ ساتھ صنعتوں کو ریلیف دیتے ہوئے برآمدات کوبڑھانے پر توجہ دی جائے اور سیلز ٹیکس ریفنڈ کی بروقت ادائیگی یقینی بنائی جائے تاکہ برآمدات میں اضافہ ممکن ہوسکے۔

مزید : کامرس