امریکہ کا سیاسی پناہ مانگنے والوں کو ملک بدر،گوئٹے مالا بھیجنے کا فیصلہ

امریکہ کا سیاسی پناہ مانگنے والوں کو ملک بدر،گوئٹے مالا بھیجنے کا فیصلہ

  



واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) امریکی حکومت نے بارڈر پر سیاسی پناہ کی غرض سے داخل ہونے کی کوشش کرنیوالے افراد کو ملک بدر کر کے گوئٹے مالا بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وائٹ ہاؤس کے ایک تازہ بیان میں بتایا گیا ہے اس سلسلے میں ایک نیا ضابطہ جاری کر دیا گیا ہے۔ ٹر مپ انتظامیہ نے رواں سال کے آغاز میں گوئٹے مالا کی رضامندی حاصل کرنے کیلئے اس کیساتھ ایک سمجھوتے پر دستخط کئے تھے لیکن کار ر وائی کا آغاز کرنے کیلئے نیا ضابطہ اب جاری کیا گیا ہے۔ نیا ضابطہ یکم دسمبر سے موثر ہو گا جس کے اطلاق کے بعد امریکہ میں داخلے کے تمام مقامات پر قانونی یا غیر قانونی طریقے سے سیاسی پناہ کے حصول کے تمام امیدواروں کو سکریننگ کے ایک نئے عمل سے گزرنا ہو گا۔ مثال کے طور پر ہنڈراس اور ایل سلواڈور سے آنیوالے تارکین وطن کو پوچھا جائے گا کیا انہوں نے آنے سے قبل گوئٹے مالا میں پناہ کے حصول کی کوشش کی تھی جنہیں ایسا نہ کرنے پر وہاں بھیج دیا جائے گا۔ امریکی میڈیا نے بتایا گوئٹے مالا کیساتھ کیا جانیوالا سمجھوتہ محفوظ تیسرے ممالک کیساتھ معاہدوں میں شامل ہے۔ اس طرح کا معاہدہ پہلے صرف کینیڈا کیساتھ طے پایا ہے۔

امریکہ فیصلہ

مزید : صفحہ اول