کھاد‘ بجلی مہنگی‘ کاشتکاروں کا احتجاج‘ دھرنے‘ بل نذر آتش

کھاد‘ بجلی مہنگی‘ کاشتکاروں کا احتجاج‘ دھرنے‘ بل نذر آتش

  



ملتان‘بہاولپور‘ میلسی‘ کہروڑ پکا‘ وہاڑی (سپیشل رپورٹر‘ بیورو رپورٹ‘ تحصیل رپورٹر‘ نمائندہ خصوصی) پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد محمود کھوکھر نے دیگر رہنماؤں میاں آصف آرائیں، بصیرالرحمن ساجد بودلہ، رانا محمد امین، مصباح خان، رانا شمشاد کے ہمراہ پریس کلب میں پریس کانفرنس(بقیہ نمبر31صفحہ12پر)

کے دوران اعلان کیا ہے کہ موجودہ حکومت پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ سے بھی آگے نکل گئی ہے جس نے غریب کسانوں کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے بجلی کے ریٹ میں 5روپے 35پیسے فی یونٹ سے بڑھا کر 20روپے کردیا ہے ڈیڑھ سال کے دوران یوریا کھاد کی بوری کاریٹ 13سو روپے سے 2040، ڈی اے پی کا ریٹ 23سو روپے سے بڑھ کر 37سو روپے، ڈیزل کا ریٹ 80روپے سے بڑھ کر 126روپے تک ہو گیا ہے جبکہ لیبر چارجز بھی ڈبل ہو چکے ہیں گندم کی پیدوار امسال صرف 25فی صد، چاول 30فی صد، مکئی 40فی صد جبکہ کپاس کی پیداوار میں 45فی صد کمی آئی ہے پیداواری لاگت بڑھ گئی ہے لیکن پیداوار میں کمی آگئی ہے چینی اور آٹے کا ریٹ ایک سال میں ڈیڑھ گنا بڑھ گیا ہے اسی طرح گندم کے بیج کا ریٹ بھی پنجاب سیڈ کارپوریشن نے بڑھا دیا ہے جس کی وجہ سے کاشتکار رل گئے ہیں ایسے حالات میں وہ اپنے بچے ہی فروخت کرکے اور کشکول اٹھا کر ہی اپنے خاندانوں کی کفالت کر سکتے ہیں انہوں نے مطالبہ کیا کہ بجلی کا اضافہ شدہ ریٹ فی الفور واپس لیاجائے، گنے کا ریٹ 250روپے فی من جبکہ گندم کا ریٹ 15سو روپے فی من کیاجائے اگر ان کے مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو وہ احتجاجی تحریک وسیع کردیں گے اور 27نومبر کو کسان کشکول مارچ کا پنجاب اسمبلی جبکہ 28نومبر کو پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا جائے گا بعدازاں کسانوں نے نواں شہر چوک تک مطالبات کے حق میں احتجاجی ریلی بھی نکالی اور بجلی کے بل نذر آتش کئے اور بچے برائے فروخت کے سٹال لگائے۔ زرعی مداخل،کھادوں اور بجلی کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف پاکستان کسان اتحاد کے زیر اہتمام کاشتکاروں نے احتجاجی ریلی نکالی۔ریلی کے شرکا ء نے مطالبات کی منظوری کیلئے شدید نعرے بازی کی اور بجلی کے بل نذر آتش کیے۔پاکستان کسان اتحاد کے ضلعی صدر حافظ حفیظ احمد،ضلعی چیئرمین میاں محمد اسلم اور ضلعی سیکرٹری جنرل سید شفقت بخاری،سینئر نائب صدر ملک شمس،چیئرمین احمد پور شرقیہ رحیم بخش کورائی کی قیادت میں پریس کلب سے یونیورسٹی چوک تک احتجاجی ریلی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ زراعت کی ترقی ملکی ترقی کی ضامن ہے لیکن حکومت کی ناقص زرعی پالیسوں کی وجہ سے ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھنے والا شعبہ آج تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے۔انہوں نے کہا کہ آج کھاد،سپرے،بجلی اور دیگر زرعی مداخل کی قیمتوں میں آئے روز اضافے کی وجہ سے کسان معاشی طور پر تباہ ہو چکا ہے۔ حکومت نے کسانوں کو ریلیف اور سبسڈی دینے کاایک بھی وعدے کو پورا نہیں کیا۔فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کے نام پر بجلی کے بلوں نے کسانوں کی چیخیں نکلوا دی ہیں۔ حکومت نے کسانو ں کو 5.35پیسے فی یونٹ بجلی دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن ہمیں 14روپے فی یو نٹ سے بھی زیادہ چارج کیے جار ہے ہیں اوربجلی کے نرخ سے زیادہ ٹیکس لگا دئے گئے ہیں۔ مقررین کا کہنا تھا کہ سابق حکومت کے دور میں ڈی اے پی کی بوری بارہ سو روپے کی تھی جو اب ہمیں دو ہزار پچاس روپے میں مل رہی ہے۔احتجاجی مظاہرین کا کہنا تھا کہ اگر حکومت نے کسانوں کے جائز مطالبات منظور نہ کیے تو حکومت کی کسان اور زراعت کش پالیسوں کے خلاف 27نومبر کو پنجاب اسمبلی کے سامنے ہزاروں کسان احتجاجی مظاہرہ کریں گے اورمطالبات کی منظوری تک ہمار ا احتجاج جاری رہے گا۔احتجاجی ریلی سے تحصیل صدر سے ملک خالد جوئیہ،جنرل سیکرٹری چوہدری ایوب،سینئر نائب صڈر ملک آفتاب چنڑ،ملک جمیل،مہر سجاد احمد اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ حکومت نے ٹیکس کی بھرمار لگا کر کسانوں کی کمر توڑ دی ہے۔جس پر کسان اتحاد کھوکھر گروپ میلسی نے پریس کلب کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے بجلی کے بل جلا دیئے۔ کسان اتحاد کھوکھر گروپ میلسی کے تحصیل صدر میاں محمد اعجاز آرائیں، سرپرست اعلی چوہدری نورالامین، چیئرمین ایگزیکٹو کمیٹی چوہدری فاروق احمد کی قیادت میں پریس کلب میلسی کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے بجلی کے بل جلا دئیے۔اور مطالبہ کیا کہ فوری FPAاور QTRکے ٹیکس ختم کئے جائیں۔اور اگر ٹیکس ختم نہ کئے گئے تو تب تک ہم ٹیوب ویل بلوں کی ادائیگی بند رکھے گے۔ اور ساتھ ہی ہمارا احتجاج وسیع پیمانے تک پھیل جائے گا۔اور 27نومبر کو لاہور اور28نومبر کو اسلام آباد دھرنا دیں گے۔احتجاج میں مہر ریاض احمد، میاں شعیب احمدارائیں،میاں محمد افضل طاہر،میاں محمد اکرم، میاں جان محمد، فقیراللہ،راؤ رئیس،مہر عزیز سمیت سیکڑوں کسانوں نے شرکت کی۔ کسان اتحا د کی جا نب سے وا پڈا آ فس کے با ہر بجلی بلوں کو آ گ لگا کر حکو مت کے خلاف شد ید احتجاج کیا گیامظا ہرین حکو مت کے خلاف شد ید نعرے با زی کی کسان اتحاد تحصیل صدر فیاض خان بلوچ کا کہنا تھا کہ بجلی کے بلوں میں ٹیکسوں کی بھر مار کر دی ہے کسا نوں کے سا تھ ظلم کیا جا رہا ہے کسان پہلے ہی فصلوں کے نہ ہو نے کی وجہ سے شدید پر یشان ہیں مو جودہ حکو مت کے آ نے کے بعد رہی سہی کسر بجلی کے بلوں نے بے جاء ٹیکسوں سے پوری کر دی حکومت اس کو وا پس لے نہیں تو احتجاج کا دا ئرہ بڑھا دیا جا ئے۔ پاکستان کسان اتحاد کا حکومت کے خلاف میپکو کمپلیکس کے باہر احتجاجی مظاہرہ اور دھرنا احتجاجاً بجلی کے بل جلا ڈالے واقعات کے مطابق پاکستان کسان اتحاد کے کارکنوں نے بجلی کے بلوں میں ناجائز ٹیکسزکے خلاف میپکو کمپلیکس کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا اور دھرنا دیا احتجاجی مظاہرین کی قیادت ضلعی صدر پاکستان کسان اتحاد چوہدری افتخار احمد کررہے تھیواپڈاآفس کے باہر احتجاجی مظاہرین نے احتجاجاًبجلی کے بل جلادیئے۔ احتجاجی مظاہرین میں چوہدری اقبال یوسف قاضی محمد نواز غلام حسین مہے رانا محمد نواز حاجی عمران حسن چوہدری ذوالفقار علی سیٹھ اسد ریاض سمیت کسانوں کاشتکاروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی اس موقع پر ضلعی صدر پاکستان کسان اتحاد چوہدری افتخار احمد اور جنرل سیکرٹری محمد اکرم کمبوہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ واپڈا کی جانب سے ناجائز ایف پی اے، ڈیٹیکشن اور کیو ٹی آر ٹیکسز بل جلا رہے ہیں۔صوبہ پنجاب کے ہرضلع میں کسان اپنا احتجاج ریکارڈ کرا رہے ہیں کسان27 نومبر کو لاہور کی طرف مارچ کریں گے۔اگر پھر بھی ہمارے مطالبات تسلیم نہ ہوئے تو 28 نومبر کو اسلام آباد جائیں گیحکومت نے ہمارے ساتھ فی یونٹ 5روپے 35پیسے کا وعدہ کیا تھا وہ پورا کرے۔بجلی بلوں میں 15 سے 25روپے فی یونٹ لگائے جا رہے ہیں اگر حکومت نے ہمارے ساتھ کیا وعدہ پورا نہ کیا تو کسان احتجاجاً بل ادا نہیں کرینگے۔احتجاجی مظاہرین نے حکومت کیخلاف شدید نعرے بازی کی۔

احتجاج/کسان

مزید : ملتان صفحہ آخر