سی او پی ڈی کا عالمی دن‘ مرض سے آگاہی کیلئے ہسپتالوں میں تقریبات

    سی او پی ڈی کا عالمی دن‘ مرض سے آگاہی کیلئے ہسپتالوں میں تقریبات

  



ملتان (وقائع نگار) سانس کی دائمی رکاوٹ(سی او پی ڈی)کا عالمی دن 20 نومبر(بدھ) گزشتہ روز کو منایا گیا ہے۔اس مرض کے حوالے (بقیہ نمبر46صفحہ12پر)

سے آگہی پیدا کرنے کے لیے تقریبات منعقد ہوں گی۔نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال کے شعبہ امراض سینہ کے زیر اہتمام آگہی واک ہوئی۔ جس میں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر مصطفے کمال پاشا سیمت دیگر سینئر و جونیئر ڈاکٹروں نے شرکت کی۔اس کے علاؤہ ملتان کے مختلف سرکاری ہسپتالوں جن میں چلڈرن کمپلیکس۔کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ ملتان اور دیگر ہسپتالوں نے بھی اس دن کی مناسبت سے واک اور تقریبات منعقد ہوئی ہیں۔ایک اندازے کے مطابق سی او پی ڈی برطانیہ میں ہرسال 12 لاکھ افراد کو متاثر کرتی ہے۔عالمی ادارہ صحت کے مطابق 2030 میں یہ بیماری دنیا میں ہونے والی مجموعی اموات کی تیسری بڑی وجہ بن سکتی ہے۔سگریٹ نوشی،دھواں،ماحولیاتی آلودگی سانس کی دائمی رکاوٹ کی بیماری کی بڑی وجوہات ہیں۔یہ دمہ کی وہ بیماری ہے جسکا علاج کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔ترقی پذیر ممالک میں 90 فیصد اموات اس مرض کی وجہ سے ہوتی ہیں۔2015 میں دنیا میں 30 لاکھ 17 ہزار افراد سی او پی ڈی کی وجہ سے فوت ہوئے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں 40 سال سے زیادہ عمر کے افراد میں اس بیماری کا تناسب 2.11 فیصد ہے

مرض

مزید : ملتان صفحہ آخر