سینئر ایڈوکیٹ معظم بٹ کا معدنیات بل عدالت میں چیلنج کرنے کا اعلان

سینئر ایڈوکیٹ معظم بٹ کا معدنیات بل عدالت میں چیلنج کرنے کا اعلان

  



پشاور (سٹی رپورٹر)متحدہ قبائل مشران پارٹی اور سنئیر ایڈوکیٹ معظم بٹ نے معدنیات بل کو عدالت میں چیلج کرنے کا ا علان کرتے ہوئے معدنیات بل کو قبائل کے حقوق مارنے کے مترادف قرار دیتے ہو ئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مذکورہ بل معدنیات کے حوالے سے بد نیتی پر مبنی ہے اس پر نظر ثانی کی جائے جبکہ صوبہ بھر کے سبزی منڈیوں میں بغیر ورک پرمٹ کے کا م کے کا روبا ر کر نے والے افغانیوں کے خلاف کارروائی کرنے سمیت نام نہاد منڈی مشران اور منڈیوں میں جاری منی لانڈرنگ کو روکنے کیلئے اقدامات کیے جائے بصورت دیگر احتجاجی تحریک چلائنگے جبکہ اسپیکر کے خلاف پٹیشن دائر کرینگے گزشتہ روز پشاور پریس کلب میں سنیئر ایڈوکیٹ معظم بٹ،قبائل مشر ملک حبیب نے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ معدنیات کا بل اسپیکر نے بغیر ووٹنگ کے اسملی سے پاس کروایا جو بد نیتی پر مبنی ہے جبکہ قبائلی انضمام سے خوش تھے کے مسائل ختم ہو جائے گے مگر حکومت قبائلی علاقں کے وسائل پر قبضہ کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ معدنیات بل میں ترمیم جیسے اقدامات قانون سازی مشقوق بنا دیتی ہیں جسکے خلاف اسمبلی میں اپوزیشن بھی سراپا احتجاج ہے۔انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں کے ریسورسز کے لیے ایک علیحدہ ایکٹ بنانا چاہیے تھا۔انہوں نے مزید کہاکہ معدنیات بل کو ہائی کورٹ میں چیلنج کرینگے جبکہ اسپیکر کے خلاف پٹیشن دائر کرینگے۔انہوں نے کہا کہ شہر ہی شہر ہی نہیں صوبہ بھر کی پھل اور سبزی منڈیوں میں منی لانڈرنگ کا سلسلہ جاری ہے جبکہ ورک پرمٹ کے بغیر افغان مہاجروں کی بڑی تعداد منڈیوں میں کام کررہی ہے اسکے علاوہ 1998سے منڈیوں سے منی لانڈنگ کا سلسلہ جارہ ہے اور ملک سوہنی کیخلاف نیب کا ریفرنس بن چکا ہے جو منڈیوں کے 98 سے ٹھیکیدار بنے بیٹھے ہیں جسکے خلاف نیب مزید تحقیقات کریں۔انہوں نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے معدنیات بل میں ترمیم پر نظر ثانی کی جائے جبکہ منڈیوں بغیر ورک پرمٹ مہاجروں کے خلاف کارروائی کرنے سمیت سبزی منڈیوں میں جاری منی لانڈرنگ کو روکا جائے بصورت دیگر احتجاج تحری ک چلانے سمیت عدالتوں سے رجوع کرینگے اور اسپیکر کے خلاف پٹیشن لے کر اینگے

مزید : پشاورصفحہ آخر