ضم اضلاع کے وسائل پر پہلا حق مقامی افراد کا ہے، حاجی غلام احمد بلور

ضم اضلاع کے وسائل پر پہلا حق مقامی افراد کا ہے، حاجی غلام احمد بلور

  



خیبر (بیورورپورٹ) عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر رہنما حاجی غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ ضم اضلاع کے وسائل پر پہلا حق مقامی افراد کا ہے لیکن موجودہ حکومت دہشت گردی سے متاثرہ عوام سے ان کا حق چھیننا چاہتی ہے۔ لنڈی کوتل ضلع خیبر میں ملک دریا خان آفریدی کی اے این پی میں شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے غلام احمد بلور نے کہا صوبے میں ضم اضلاع کو پہلے ہی بنیادی سہولتوں سے محروم رکھا گیا ہے او ر اب انضمام کے بعد معدنیات سے متعلق ترمیمی بل کے تحت حکومت ان علاقوں پر مزید قبضہ کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا حکومت شروع سے پشتونوں کے ساتھ امتیازی سلوک کررہا ہے اور اس بار بھی ایک منصوبے کے تحت دھاندلی کے ذریعے سلیکٹڈ شخص کو کرسی پر بٹھایا گیا،جتنے بھی پشتون رہنماء ہیں انہیں سازش کے ذریعے باہر رکھا گیا۔حاجی غلام احمدبلور نے کہا کہ پشتونوں کو ہمیشہ استعمال کیا گیا ہے، باچا خان کے علاوہ کسی نے بھی پشتونوں کے حقوق کے لیے جدوجہد نہیں کی، اسی وجہ سے عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہی کا حق باچا خان کے خاندان کو حاصل ہے۔انہوں نے کہا آج اگر نئے اضلاع کو صوبے کے دھارے میں شامل کیا گیا، آج اگر یہاں گورنر بیٹھا ہے، اسمبلی ہے اور اس اسمبلی میں پشتونوں کی حقوق کی بات ہوتی ہے تو یہ سب باچاخان کے جدوجہد کے ثمرات ہیں۔انہوں نے موجودہ حکومت کے کارکردگی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ تبدیلی سرکار نے مہنگائی سے غریب عوام کا جینا محال کردیا ہے، عمران خان نے اقتدار میں آنے سے پہلے عوام سے جو وعدے کیے تھے آج تک ایک بھی پورا نہیں کیا۔ حاجی غلام احمد بلور نے کہا اگر ہم اپنے آپ سے عہد کرے اور ایک ہوجائے تو کوئی بھی ہم سے ہمارا حق چھین نہیں سکتا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر