ٹانک، پلازہ افراد کے قاتلوں کی عدم گرفتار ی کیخلاف بیٹنی قبائل کا مظاہرہ

ٹانک، پلازہ افراد کے قاتلوں کی عدم گرفتار ی کیخلاف بیٹنی قبائل کا مظاہرہ

  



ٹانک (نمائندہ خصوصی) سانحہ اماخیل میں پندرہ بے گناہ افراد کے قاتلوں کی عدم گرفتاری کے خلاف بیٹنی قبائل کا ڈی سی افس کے سامنے احتجاج اور دھرنا ٹانک جنوبی وزیرستان پانچ گھنٹے تک ہر قسم کی ٹریفک کے لئے بند، ایم این اے مفتی عبد الشکور کی قیادت میں بیٹنی قبائل جرگہ کا ضلعی انتظامیہ کیساتھ کامیاب مذاکرات کے بعد سڑک ٹریفک کے لئے کھول دی گئی تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز ٹاؤن ہال میں بیٹنی قبائل کا سانحہ اماخیل واقعہ میں نامزد ملزمان کی گرفتاری کے لئے سینکڑوں افراد پر مشتمل جرگہ منعقد ہوا جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے ایم این اے مفتی عبد الشکور،ایم پی اے محمود بیٹنی،غلام قادر، عبد اللہ،سابق تحصیل ناظم ہیبت خان بیٹنی،ملک رفعت اللہ بیٹنی، فضل کریم تتور کا کہنا تھا کہ ٹانک پولیس ملزمان کی گرفتاری میں لیت ولعل سے کام لے رہی ہے اور ایک ماہ سے زائد کا عرصہ گزرنے کے بعد صرف ایک ملزم کو گرفتار کیا ٹاؤن ہال کے بعد جرگہ ڈی سی افس روانہ ہو گیا اور وہاں پر جرگہ شرکاء نے دھرنا دیکر جنوبی وزیرستان شاہراہ کو ہر قسم کی ٹریفک کے لئے بند کر دیا بعد ازاں ایم این اے مفتی عبد الشکور کی قیادت میں جرگہ کی تشکیل کردہ کمیٹی نے واقعہ کے شہداء کے لواحقین کی موجودگی میں ڈپٹی کمشنر فہد وزیر اور ڈی پی او عارف کیساتھ طویل مذاکرات کئے تاہم مذاکرات کے اختتام پر ایم این اے نے شرکاء جرگہ کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ نے بتایا کہ اس واقعہ کے ایک گرفتار ملزم کی گرفتاری کے بعد دیگر اہم ملزمان تک رسائی حاصل کرنے میں کافی پیش رفت حاصل ہوئی ہے انکا کہنا تھا کہ اس واقعہ کے شہداء کے لواحقین کوشہداء پیکیج دلوانے کے لئے بھی انتظامیہ بھر پور کوشاں ہے ایم این اے کا کہنا تھا کہ کمیٹی نے انتظامیہ پر واضح کیا کہ اگر واقعہ کے دیگر ملزمان کی گرفتاری میں کسی غفلت کوتاہی سے کام لیا تو احتجاج کا دائرہ پشاور تک بڑھایا جائیگا تاہم اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ کا کردار باعث اطمینان ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر