سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے تک میدان میں رہیں گے:میاں افتخار

سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے تک میدان میں رہیں گے:میاں افتخار

  



پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ حکومت کا بوریا بستر گول ہونے اور جمہوریت کی اصل معنوں میں بحالی تک میدان میں رہیں گے‘ آئین کی بالادستی چاہتے ہیں‘ ہمار ا مطالبہ ہے کہ سلیکٹڈ وزیراعظم مستعفی ہوں اورالیکشن کمیشن کی نگرانی میں فوج کی مداخلت کے بغیر دوبارہ غیرجانبدارانہ انتخابات ہوں۔ پی ٹی آئی کو غیرملکی فنڈنگ کیس کی سماعت کے دوران الیکشن کمیشن کے باہر رہبرکمیٹی کے دیگر ممبران کے ہمراہ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کا امیج وزیراعظم عمران خان نے پوری دنیامیں خراب کررکھاہے وہ جہاں بھی جاتا ہے یہ واویلاکرتا ہے کہ پاکستان میں کرپشن ہورہی ہے‘ پوری لیڈرشپ کرپٹ ہے تاریخی اوربڑی پارٹیوں کو انہوں نے کرپٹ قراردیا ہے‘عمران خان نے  پاکستان کی ساکھ اتنی زیادہ خراب کردی ہے کہ اب ہم پر کوئی اعتماد نہیں کررہا‘ لیکن وہ کبھی اپنی جماعت کے بارے میں کچھ نہیں کہتا کہ وہ خود کتنے کرپٹ ہیں۔ اس کے دائیں بائیں بیٹھے لوگ جتنے کرپٹ ہیں اور کوئی نہیں لیکن وہ پی ٹی آئی کا حصہ ہیں،ا سلئے وہ منظور نظر کی فہرست کا حصہ ہیں پی ٹی آئی کو غیرملکی فنڈنگ کیس کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ حکمران جماعت نے مختلف حکومتی ہتھکنڈے استعمال کرتے ہوئے اس کیس کو موخرکیا‘ یہ ایک ٹیسٹ کیس ہے عمران خان نے جن پارٹیوں کو اپنے راستے سے ہٹانے کیلئے ایک مخصوص ایجنڈے کے تحت کرپٹ قراردیا تھا آج پتہ چلے گا کہ اصل کرپٹ کو ن ہے‘ وزیراعظم نے یہ رٹ لگائی ہوئی ہے کہ میں این آر او نہیں دونگا اب وہ یہ بھی بتادیں کہ انہیں این آراو کون دے گا‘عمران کیس کا سامناکریں ہم کوئی مداخلت نہیں کررہے اگر اس کا فیصلہ آگیا  تو نہ عمران رہیں گے نہ ان کی پارٹی۔ یہ ٹیسٹ کیس ہے اس کا جلد فیصلہ ہونا چاہئے‘ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھ اللہ ہے اور عوام ہیں جو ہمارے پیچھے کھڑے ہیں 

مزید : صفحہ اول