سوشل میڈیا اور سرکاری ملازمین کو کنٹرو ل میں لانے کا حکومتی منصوبہ سامنے آگیا

سوشل میڈیا اور سرکاری ملازمین کو کنٹرو ل میں لانے کا حکومتی منصوبہ سامنے آگیا
سوشل میڈیا اور سرکاری ملازمین کو کنٹرو ل میں لانے کا حکومتی منصوبہ سامنے آگیا

  



اسلام آباد(ویب ڈیسک) سرکاری اداروں میں واٹس ایپ کے استعمال سمیت فیس بک، یوٹیوب اور یو ایس بی کے استعمال پر پابندی کی تجویز ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق حکومت نے سوشل میڈیا کو اپنے کنٹرول میں لینے کا فیصلہ کرلیا ہے اور پہلے مرحلے میں سرکاری ملازمین زد میں آئیں گے۔ علی خان جدون کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی کا اجلاس میں آئی ٹی بورڈ حکام نے بتایا ہے کہ سوشل میڈیا کی خبروں کی تصدیق کیلئے اتھارٹی بنانے کی تجویز حکومت کو پیش کردی ہے، جب کہ سوشل میڈیا پرجعلی خبروں کی روک تھام اورخبر کی تصدیق کا نظام بنانے کی کوشش کررہے ہیں۔

آئی ٹی بورڈ کے حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ سرکاری ملازمین دفاتر میں واٹس ایپ کا استعمال یا محکمانہ دستاویز اپنے ذاتی واٹس ایپ پر شیئر نہیں کریں گے بلکہ ملازمین کے لئے واٹس ایپ طرز کی سروس متعارف کرائی جائے گی جس پر وائس میسج، ویڈیو اور دستاویزات بھیجے جا سکیں گے، اور اس سروس کا سرور حکومت بنائے گی۔این آئی ٹی بی حکام نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ سرکاری افسران یا ملازم سوشل میڈیا پر پارٹ ٹائم بزنس نہیں کرسکیں گے اور مستقبل میں سرکاری اداروں میں فیس بک، یوٹیوب اور یو ایس بی کے استعمال پر بھی پابندی کی تجویز ہے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد