نوازشریف لندن پہنچ گئے لیکن ایئرایمبولینس کا اندازاً کتنا خرچ آیا ہوگا اور سول ایوی ایشن کی کتنی رقم تاحال واجب الادا ہے؟ حیران کن خبرآگئی

نوازشریف لندن پہنچ گئے لیکن ایئرایمبولینس کا اندازاً کتنا خرچ آیا ہوگا اور ...
نوازشریف لندن پہنچ گئے لیکن ایئرایمبولینس کا اندازاً کتنا خرچ آیا ہوگا اور سول ایوی ایشن کی کتنی رقم تاحال واجب الادا ہے؟ حیران کن خبرآگئی

  



لندن، لاہور(ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نوازشریف اپنے علاج کے لیے لندن پہنچ چکے ہیں جہاں گزشتہ روز انہوں نے چیک اپ بھی کروایا ہے اور اب نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا ہے کہ ایئرایمبولینس کے واجبات تاحال واجب الادا ہیں ۔ 

دنیا نیوز کے مطابق   ایئر ایمبولینس ایئر بس 319 کی گراؤنڈ ہینڈلنگ، سابق مشیر شجاعت عظیم کی کمپنی رائل ایئرپورٹ سروسز نے کی جبکہ ایرونوٹیکل و دیگر چارجز سول ایوی ایشن اتھارٹی کو کون ادا کرے گا اس حوالے سے کوئی فیصلہ نہیں ہو سکا۔

ایرونوٹیکل و دیگر چارجز کی مد میں 4500 ڈالر سے لیکر 7000 ڈالر تک کی ادائیگیاں واجب الادا ہیں۔ بعض چھوٹی ایئر ایمبولینسوں کے چارجز سی اے اے وصول نہیں کرتی۔ پاکستان سے لندن پہنچنے تک ایئرایمبولینس کے اندازاً اخراجات ایک لاکھ پاؤنڈ سے زائد ہیں۔ قطر ایئر ایمبولینس کا کرایہ یومیہ ایک لاکھ پائونڈ سے زائد ہے جبکہ فلائٹ سرجن کی فیس 700 پاؤنڈ یومیہ، ڈاکٹرز 700 پاؤنڈ، نرس کی 350 پاؤنڈ، پیرا میڈیکل سٹاف کی یومیہ فیس 350 پاؤنڈ ہے۔

رپورٹ کے مطابق بتایا گیا ہے قطر سے آنے والی ایئر ایمبولینس کی پاکستان آمد اور لاہور ایئر پورٹ پر ایرونوٹیکل چارجز سمیت سی اے اے کے اخراجات کون جمع کروائے گا اس حوالے سے سول ایوی ایشن انتظامیہ اور دیگر محکمے ایک دوسرے پر ذمہ داری ڈالنے لگے۔علامہ اقبال ایئرپورٹ پر موجود سی اے اے انتظامیہ نے معاملے پر خاموشی اختیار کرلی۔ لاہور ایئرپورٹ پر موجود پی آر او سی اے ا ے نے بھی فون اٹینڈ نہ کیا جبکہ کراچی میں تعینات پی آر او بھی فون پر بات کرنے سے گریز کرتے رہے، لینڈ لائن پر فون سننے کے بجائے آپریٹر نے جواب کے طور پر کہا وہ تو عمرے پر گئے ہیں۔

مزید : قومی /بزنس