دھرناختم کرنے کیلئے کون کون سی پیشکش ہوئی،فضل الرحمان نے خاموشی توڑ دی

دھرناختم کرنے کیلئے کون کون سی پیشکش ہوئی،فضل الرحمان نے خاموشی توڑ دی
دھرناختم کرنے کیلئے کون کون سی پیشکش ہوئی،فضل الرحمان نے خاموشی توڑ دی

  



ڈیرہ اسماعیل خان(ڈیلی پاکستان آن لائن)دھرنے اور آزادی مارچ کے خاتمے کیلئے کیا کیا پیشکشیں ہوئیں، مولانا فضل الرحمان نے تہلکہ خیز انکشافات کرتے ہوئے خاموشی توڑ دی۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ حکومت مخالف مظاہرے روکنے کیلئے انہیں بڑی بڑی پیشکشیں کی گئیں۔ان کے بقول انہیں چیئرمین سینیٹ ، گورنر شپ، بلوچستان میں حکومت کی پیشکش کی گئی۔فضل الرحمان کے مطابق انہیں یہ بھی کہا گیا کہ سیٹ خالی کردیتے ہیں آپ ڈی آئی خان سے منتخب ہوکر واپس پارلیمنٹ میں آجائیں۔تاہم انہوں نے یہ تمام پیشکشیں یہ کہہ کر مسترد کردیں کہ وہ اصولی آدمی ہیں۔

انہوں نے کہا ڈیرہ اسماعیل خان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ شاہراہوں کی بندش ختم کرنے کا فیصلہ رہبر کمیٹی نے کیا، کارکنوں کا شکر گزار ہوں جنہوں نے ایک ہفتے تک شاہراہیں بند رکھیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب یہ تحریک ملک کے بازاروں تک جائے گی، ہر ضلع میں مظاہرے شروع ہوں گے۔تحریک انصاف کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا ایک سال میں ملک کی معیشت تباہ ہو گئی، اگر ٹماٹر 300 روپے ملتا ہے تو کہتے ہیں کہ 17 روپے کلو ہے، یہ کیا جانیں ملک کا غریب کس کرب سے زندگی گزار رہا ہے۔

مزید : قومی