پی ایس ایل فرنچائزز مالکان کا وزیراعظم سے ملاقات کا فیصلہ مگر کیوں؟ احسان مانی کیلئے نئی مشکل کھڑی ہو گئی

پی ایس ایل فرنچائزز مالکان کا وزیراعظم سے ملاقات کا فیصلہ مگر کیوں؟ احسان ...
پی ایس ایل فرنچائزز مالکان کا وزیراعظم سے ملاقات کا فیصلہ مگر کیوں؟ احسان مانی کیلئے نئی مشکل کھڑی ہو گئی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) فرنچائزز نے وزیراعظم عمران خان کو پی ایس ایل کے مسائل سے آگاہ کرنے کا فیصلہ کر لیاہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) اور پی ایس ایل فرنچائزز میں ان دنوں بعض امور پر شدید اختلافات موجود ہیں، چوتھے ایڈیشن کی آمدنی سے حصہ ملنے اور مجموعی شیئر بڑھانے تک ٹیموں نے بورڈ سے کہا تھا کہ وہ فیس کا چیک کیش نہ کرائے، اس دھمکی کا الٹا اثر ہوا اور پی سی بی نے سخت جواب دیتے ہوئے فرنچائزز سے کہا کہ اگر 48 گھنٹوں میں اپنی مالی ذمہ داریاں پوری نہ کیں تو گزشتہ دنوں طے پانے والے امور پر عمل روک دیا جائے گا۔

یاد رہے کہ بورڈ نے فیس کیلیے ڈالر کا ریٹ 138 طے کرنے، براڈکاسٹ ریونیو شیئر میں اضافے سمیت بینک گارنٹی کے بجائے چیک لینے پر اتفاق کیا تھا، مگر فرنچائزز اس میں مزید اضافہ چاہتی ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ ایک جونیئر افسر کی سخت ای میل پر مالکان ناخوش ہیں جنہوں نے وزیر اعظم اور پی سی بی کے سرپرست اعلیٰ عمران خان سے ملاقات میں انہیں لیگ کے مسائل سے آگاہ کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور اس حوالے سے 2بااثر مالکان اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔

فرنچائزز کے مطابق بورڈ پی ایس ایل سے خوب رقم کما رہا ہے جبکہ بھاری سرمایہ کاری کرنے والی ٹیموں کو جائز حصہ نہیں دیا جاتا، اسی لئے اضافے کا مطالبہ کیا۔ ذرائع نے بتایا کہ کم سے کم 3 فرنچائزز فیس روکنے کے حق میں نہیں ہیں اور 2 فرنچائزز ہر بار بورڈ کو تنگ کرتی ہیں جبکہ ایک کے مالی حالات ان دنوں اچھے نہیں ہیں، حکام کے سخت موقف نے صورتحال مزید گھمبیر بنا دی ہے۔

مزید : کھیل