حکومت کا پشاور جلسے کی اجازت دینے سے انکار، پابندی نامنظور، پی ڈی ایم کا کل پشاور میں دمادم مست قلندر کا اعلان 

        حکومت کا پشاور جلسے کی اجازت دینے سے انکار، پابندی نامنظور، پی ڈی ایم ...

  

  پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی)پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے پی ڈی ایم کو کورونا کی موجودہ تشویشناک صورت حال میں جلسے کی اجازت دینے سے معذرت کرلی ہے جب کہ پی ڈی ایم کے میڈیا کوآرڈینیٹر کا کہنا ہے کہ 22نومبر کو پی ڈی ایم کا جلسہ ہر صورت ہوگا۔تفصیلات کے مطابق پشاورمیں ضلعی انتظامیہ نے کورونا وبا کے پھیلاؤکے خطرے کے پیش نظرپی ڈی ایم کوجلسے کی اجازت دینے سے انکارکرتے ہوئے کہا  ہے کہ حکومت نے عوامی اجتماعات سے گریزاختیارکرنے کی ہدایت کی ہے۔ڈپٹی کمشنر پشاور محمد علی اصغر نے پی ڈی ایم کے صوبائی رہنماؤں کو خط لکھا ہے جس میں کورونا کی موجودہ صورت حال میں جلسے کی اجازت دینے سے معذرت کی گئی ہے۔ خط کے مطابق شہر میں کورونا کی صورتحال تشویش ناک ہے اور کورونا کیسز کی شرح 13 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ بڑے عوامی اجتماعات سے کورونا کے بڑے پیمانے پرپھیلنے کا خدشہ ہے، مذکورہ صورت حال اورکورونا وائرس سے انسانی جانوں کوبچانے کی غرض سے جلسہ کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔واضح رہے کہ جلسہ کے لیے اجازت نامہ کی درخواست فیصل کریم کنڈی، سردارحسین بابک، مولانا عطا الحق درویش، مرتضی جاوید عباسی اورہاشم بابرنے فوکل پرسن عبدالجلیل جان کے توسط سے ڈی سی پشاورکودی تھی۔دوسری جانب میڈیا کوآرڈینیٹر پی ڈی ایم عبدالجلیل جان نے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے پابندی کسی صورت برداشت نہیں، 22نومبر کو پی ڈی ایم کا جلسہ ہر صورت ہوگا۔ دوسری طرف  پی ڈی ایم کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ، ضلعی انتظامیہ پی ٹی آئی کی بی ٹیم  بن گئی ہے، این او سی نہ دینا حکومتی چال ہے، عمران خان اور محمود خان نے کس کی اجازت سے جلسے کئے۔ پی ڈی ایم  نے   پشاور پی ڈی ایم جلسے کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ مسترد کر دیا۔ انہوں نے کہا پشاور میں جلسہ ہر صورت میں ہوگا،، خیبر پختونخوا کے عوام اور جیالے تیاری کرلیں، 22 نومبر کو دمادم مست قلندر ہوگا۔ن لیگ کے صوبائی ترجمان اختیار ولی کا کہنا تھا پی ڈی ایم جلسے کی اجازت نہ دینا امتیازی سلوک ہے، عمران اور محمود خان نے کس کی اجازت سے سوات مہمند، باجوڑمیں جلسے کئے؟۔۔پی پی پی خیبرپختونخوا کے جنرل سیکریٹری فیصل کریم کنڈی نے اعلان کیا کہ پشاور میں جلسہ ہر صورت میں ہوگا، ضلعی انتظامیہ حکومتی دباؤ میں آکر پی ٹی آئی کی بی ٹیم کا کردار ادا کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پشاور میں تاریخی پاور شو کرکے اپوزیشن پی ٹی آئی کی گرتی ہوئی دیوار کو ایک دھکا اور دے گی۔دوسری طرف وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے کہا ہے کہ کورونا وباء ایک عالمی حقیقت ہے یہ کسی ذہن کی اختراع نہیں، عدالتی فیصلہ آچکا ہے، اپوزیشن اب ہوش کے ناخن لے۔ سینیٹر شبلی فراز نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ میں لکھا کہ اپوزیشنکو عوام دشمنی کی مرتکب نہیں ہونا چاہیئے ۔ ان کا کہنا تھا کہ عوام کی صحت کا تحفظ ہماری اولین ترجیح ہے، خدانخواستہ اگر قیمتی جانوں کا ضیاع ہوا تو اس کے ذمہ داران اپوزیشن رہنما اور جلسوں کے منتظمین ہوں گے۔

پشاور جلسہ

مزید :

صفحہ اول -