سٹیٹ بینک کا سستی ہاؤسنگ فنانس  کے فروغ کیلئے نئے ضوابط کا اعلان 

   سٹیٹ بینک کا سستی ہاؤسنگ فنانس  کے فروغ کیلئے نئے ضوابط کا اعلان 

  

 کراچی (این این آئی)  سٹیٹ بنک ہاسنگ اور تعمیراتی فنانس کو فروغ دینے کیلئے بینکوں کو کم لاگت اور سستی ہاسنگ فنانس مہیا کرنے کی ترغیب دینے کے لیے پانچ ضوابطی رعایات کا اعلان کیا ہے۔ اول، بینکوں کے لیے موجودہ ضوابط میں استعمال کردہ کم لاگت ہاسنگ فنانس کی تعریف ہاسنگ فنانس کے لیے ٹیئرز Iاور IIکے تحت حکومت کی مارک اپ فیسلٹی فار ہاسنگ فنانس میں استعمال کی جانے والی تعریف سے ہم آہنگ کردی گئی ہے۔ خصوصا اسٹیٹ بینک کے ضوابط میں ہاسنگ یونٹ کی قیمت 3ملین روپے سے بڑھا کر 3.5ملین روپے کردی گئی ہے جبکہ قرضے کا زیادہ سے زیادہ حجم 2.7ملین روپے سے بڑھا کر 3.15ملین روپے کردیا گیا ہے۔ نتیجے کے طور پر بینکوں کے لیے کم لاگت ہاسنگ فنانس کی ترغیب بڑھ جائے گی۔دوسری رعایت کے تحت، کم لاگت ہاسنگ فنانس کے حوالے سے، جہاں بینک انکم پراکسیز استعمال کررہے تھے اور جہاں قرض لینے والے کی آمدنی قابل تصدیق نہیں، بینکوں کو قرض کے بوجھ کا تناسب (Debt Burden Ratio) یا ڈی بی آر کا حساب لگانے کے لیے قابل تصدیق آمدنی استعمال کرنے کی شرط سے مستثنیٰ کردیا گیا ہے۔ سوئم، کم لاگت ہاسنگ فنانس کے حوالے سے بینکوں کو ڈی بی آر کی شرط سے ان صورتوں میں بھی مستثنیٰ کردیا گیا ہے۔ لہٰذا وہ قرض گیر جو قابل تصدیق آمدنی نہیں رکھتے یا جن کی آمدنی ناقابل تصدیق ہے وہ بھی کم لاگت ہاسنگ فنانس حاصل کرنے کے اہل ہوجائیں گے۔چہارم، بینکوں کو کم لاگت ہاسنگ فنانس کے لیے 30ستمبر 2022 تک انٹرنل کریڈٹ رسک ریٹنگ سسٹم کی شرط سے بھی مستثنیٰ کردیا گیا ہے آخر ان قرض گیروں کو آسانی مہیا کرنے کے لیے جن کے پاس سیال تمسکات ہیں یا جو پہلے ہی ایک رہائشی یونٹ رکھتے ہیں، بینکوں کو یہ اجازت دی گئی ہے کہ وہ لون ٹو ویلیو تناسب کا حساب لگاتے وقت ہاسنگ فنانس کی ایکویٹی کنٹری بیوشن کی جگہ موجودہ رہائشی جائیداد یا سیال تمسکات کو قبول کرکے رہائشی جائیداد کی خریداری تعمیر کے لیے ہاسنگ فنانس فراہم کردیں۔ 

اعلان

مزید :

صفحہ اول -