دنیا بھر میں خواتین، لڑکیوں کی سمگلنگ میں اضافے کا سبب جدید ٹیکنالوجی، سی ڈا

  دنیا بھر میں خواتین، لڑکیوں کی سمگلنگ میں اضافے کا سبب جدید ٹیکنالوجی، سی ...

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) دنیا بھر میں خواتین اورلڑکیاں بدستور انسانی سمگلنگ کا نشانہ بن رہی ہیں جس میں اضافے کا ایک سبب جدید ٹیکنالوجی کا استعمال ہے،خواتین کیخلاف امتیازی سلوک کے انسداد کیلئے اقوام متحدہ کی کمیٹی ”سی ڈا“ CEDAW نے اپنے ایک حا لیہ اجلاس میں مرتب کردہ سفارشات میں یہ تبصرہ کیا ہے۔کمیٹی نے کہا ہے کہ کور ونا وائرس کی عالمی وباء کے دوران یہ حقیقت سامنے آئی ہے کہ سمگلر ڈیجیٹل سمیت تمام جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کر رہے ہیں، اس لئے انہیں ناکام کرنے کیلئے بھی جدید ٹیکنالو جی کا سہارا لینے کی ضرور ت ہے، اجلاس کے بعد کمیٹی کی ایک رکن ڈالیا لینارٹے نے ایک بیان میں سوشل میڈیا پر زور دیا ہے کہ وہ خواتین اور لڑکیوں کی سمگلنگ روکنے کیلئے اپنے وسائل کا استعمال کر کے انسانی خدمت میں ہاتھ بٹائیں، انہوں نے اس امر پر تشویش کا اظہار کیا کہ سمگلنگ میں ملوث افراد اور ادارے بااثر ہونے کے باعث سزاؤں سے بچ نکلتے ہیں، کورونا وائرس کی وباء کی وجہ سے انسانی سمگلنگ کے شکار افراد کی مشکلا ت میں مزید اضافہ ہو گیا ہے کیونکہ سمگلنگ کی طرف دنیا کی توجہ کم ہو گئی ہے،کمیٹی نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا کو سمگلنگ کیلئے استعمال کرنیوالے ادارے یا افراد اپنے اہداف تک پیغام پہنچا کر اپنی شناخت کو خفیہ رکھ لیتے ہیں اور پکڑ سے بچنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں اس کی وجہ سے متعدد ملکو میں عالمی سطح پر سائبر سپیس میں انسانی سمگلنگ میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

سی ڈا

مزید :

صفحہ اول -