پشاور ہائیکورٹ، دودھ سمیت اشیاء خوردنی میں ملاوٹ کرنیوالوں کیخلاف کارروائی کی ہدایت 

پشاور ہائیکورٹ، دودھ سمیت اشیاء خوردنی میں ملاوٹ کرنیوالوں کیخلاف کارروائی ...

  

 پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ نے دودھ سمیت دیگر کھانے پینے کی اشیا میں ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کرنے کی ہدایت کی ہے  عدالت نے ضلعی انتظامیہ کو مہنگائی کنٹرول کرنے اور سبزی منڈی اور فروٹ منڈی میں قیمتیں کنٹرول کرنے کیلئے دورے کرنے کا حکم دیا قائم مقام چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دیئے کہ ملاوٹ کرنے والے کسی رعایت  کے مستحق نہیں ہیں ایسے افراد سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے اور ملوث افراد کو جرمانوں کی بجائے گرفتار کرکے انکی دکانوں کو سیل کیا جائے کیس کی سماعت قائم مقام چیف جسٹس قیصررشید اور جسٹس ارشد علی پر مشتمل دو رکنی بینچ نے کی عدالت میں ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سید سکند شاہ، ڈپٹی ڈائریکٹر لائیو اسٹاک معصوم شاہ، اسٹنٹ کمشنر پشاور پیش ہوئے لائیو اسٹاک کے نمائندے نے عدالت کو بتایا کہ دودھ میں ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف کاروائیاں جاری ہیں، اب کیمیکل ملا دودھ مارکیٹ میں کم ہے اب لوگ سوڈا اور پانی ملاتے ہیں تاکہ دودھ کو گاڑھا کیا جائے مگر ایسے کاوربار ملوث افراد کے خلاف بھی کاروائیاں کی جا رہیں سوڈا ملا دودھ بھی مضر صحت ہوتا ہے گزشتہ ہفتے بھی کئی ہزار لیٹر دودھ ضائع کیا گیا ہے جس پر قائم مقام چیف جسٹس جسٹس قیصرر شید نے کہا کہ جرمانوں سے کچھ نہیں ہوتا ایسے افراد جو زہر بیچ رہے ہیں انکی دکانوں کو سیل کیا جائے ایسے لوگ کسی رعایت کے مستحق نہیں اسٹنٹ کمشنر پشاور نے عدالت کو بتایا کہ ضلعی انتظامیہ کے افسران صبح سویرے فروٹ منڈی اور سبزی منڈی جاتے ہیں اور افسران کے سامنے نیلامی کی جاتی ہے اشیا خورد نوش کی قیمتوں کنٹرول کرنے کیلئے بازاروں کے دورے بھی کئے جاتے ہیں جسٹس قیصر رشید نے کہا کہ دودھ سمیت دیگر کھانے پینے کے اشیا میں ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف بھی سخت ایکشن لیا جائے عدالت نے محکمہ لائیو اسٹاک اور ضلعی انتظامیہ سے رپورٹ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 17 دسمبر تک کیلئے ملتوی کر دی

مزید :

صفحہ اول -