تحریک لبیک کے نئے سربراہ سعد رضوی کے بارے میں وہ باتیں جو آپ جاننا چاہتے ہیں

تحریک لبیک کے نئے سربراہ سعد رضوی کے بارے میں وہ باتیں جو آپ جاننا چاہتے ہیں
تحریک لبیک کے نئے سربراہ سعد رضوی کے بارے میں وہ باتیں جو آپ جاننا چاہتے ہیں
کیپشن:    سورس:   TLP

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) علامہ خادم حسین رضوی کے انتقال کے بعد ان کے بڑے صاحبزادے حافظ سعد رضوی کو تحریک لبیک پاکستان کا نیا امیر مقرر کیا گیا ہے۔

حافظ سعد رضوی علامہ خادم رضوی کی موجودگی میں تحریک لبیک کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل تھے،  ان کے تقرر کا اعلان ان کے والد کی نماز جنازہ کے موقع پر جماعت کے مرکزی نائب امیر سید ظہیر الحسن شاہ نے کیا۔

تحریک لبیک کے نئے سربراہ اپنے والد کے مدرسے جامعہ ابوذر غفاریؓ میں درسِ نظامی کے آخری درجے دورہ حدیث کے طالبعلم ہیں۔ یہ وہ کلاس ہے جس میں طلبہ کو صحاح ستہ کے نام سے مشہور احادیث کی کتب کی تعلیم دی جاتی ہے۔ انہیں جماعت کا نیا امیر شوریٰ کے 16ارکان نے مشاورت کے بعد مقرر کیا ہے۔

بی بی سی سے گفتگو کرتے ہوئے سعد رضوی کے قریبی دوست محمد سلمان نے بتایا کہ علامہ خادم رضوی بیانات اور اعلانات کیا کرتے تھے لیکن پالیسی شوریٰ تیار کرتی تھی جس میں حافظ سعد بھی شامل ہوتے تھے۔ وہ شروع دن سے ہی عملی طور پر تحریک کے تنظیمی امور چلا رہے تھے اس لیے ان کیلئے جماعت کی ذمہ داریاں سنبھالنا کوئی نئی بات نہیں ہوگی۔حافظ سعد کو بھی اپنے والد کی طرح شاعری سے شغف ہے۔ ان کے یونیورسٹیوں کے طلبہ و طالبات کے ساتھ بھی گہرے روابط ہیں اور وہ سوشل میڈیا کے بھی ماہر ہیں۔

ویب سائٹ اردو نیوز سے بات کرتے ہوئے تحریک لبیک پاکستان کے رہنما پیر اعجاز اشرفی نے بتایا کہ ’سعد رضوی کے نام پر شوریٰ نے مکمل طور پر اتفاق کیا۔ اور اس کی ایک بڑی وجہ جماعت کے اندر اتحاد کو قائم رکھنا تھا۔ اور ہمیں یقین ہے کہ حافط سعد رضوی بہت احسن طریقے سے معاملات کو چلائیں گے اور اس کے ساتھ 16 رکنی شوریٰ بھی ہے۔ جو ان کی مدد کرے گی۔‘

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -