سپریم کورٹ کا فیصلہ طاہر القادری کے 22 سال پرانے موقف کی تصدیق ہے :فیض الرحمن

سپریم کورٹ کا فیصلہ طاہر القادری کے 22 سال پرانے موقف کی تصدیق ہے :فیض الرحمن

  

لاہور (پ ر)پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی صدر فیض الرحمن درانی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری کے 22 سال پرانے موقف کی تصدیق ہے ۔پاکستان عوامی تحریک کے چیئر مین نے 1990 ءکے انتخابی نتائج کے فور اً بعد پریس کانفرنس میں الیکشن میں بڑے پیمانے پر دھاندلی کی جو بات شدومد کے ساتھ کی تھی وہ اعلیٰ عدلیہ کے 22 سال بعد آنے والے فیصلے سے پوری دنیا کے سامنے اظہر من الشمس ہوگئی ہے ۔ پاکستان عوامی تحریک نے 1990ءمیں ہونے والی بدترین دھاندلی کے باعث اگلے روز ہونے والے صوبائی انتخابات کا با ئیکاٹ کر دیا تھا۔ 1990 ءکے بعد ہونے والے الیکشن بھی مختلف قسم کی دھاندلیوں سے آلودہ تھے۔ 22سال پہلے ہونی والی دھاندلی ثابت ہو گئی ہے اورآنے والا وقت بعد ازاں ہونے والی دھاندلیوں سے بھی پردہ اٹھادے گا مگر ا س وقت تک ملک وقوم کا بہت نقصان ہو چکا ہو گا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان عوامی لائرز موومنٹ کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران کیا ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ ملک اور عوام دشمن انتخابی نظام کے تحت آئندہ 100انتخابات بھی ملک کو معاشی و سیاسی استحکام اور عوام کو خوشحالی نہ دے سکیں گے اس لئے ناگزیر ہے کہ موجودہ انتخابی نظام کو دریا برد کرنے کے لیے ادارے اپنا کردار ادا کریں ۔فیض الرحمن درانی نے کہا کہ عوام کوموجودہ انتخابی نظام کے خلاف مو¿ثر آواز اٹھانا ہوگی اور پاکستان عوامی تحریک کی بیداری شعور مہم میں شامل ہوکر آئندہ نسلوں کا مستقبل بچانا ہوگا ۔

مزید :

صفحہ آخر -