لندن: موبائل کا بے جا استعمال دماغی رسولی ٹیومر کا باعث بنتا ہے، سائنسدان

لندن: موبائل کا بے جا استعمال دماغی رسولی ٹیومر کا باعث بنتا ہے، سائنسدان

  

  لندن (بیورورپورٹ) سائنسدانوں نے کہا ہے کہ موبائل اورکارڈلیس فونز کا بے جا استعمال دماغی رسولی جیسے ٹیومرز کا باعث بنتا ہے اس کی واضح مثال 60 سالہ اٹلی کی کاروباری شخص مارکولیتی ہیں جوکہ گزشتہ 12 سال سے روزانہ 6 گھنٹے تک فون کا استعمال کرتے رہے جس کے باعث آج وہ اس مرض میں مبتلا ہیں سائنسدانوں نے ان کی بیماری کی وجہ ان کے کثرت سے فون کے استعمال کوقراردیا ہے انہوں نے بتایا کہ خواہ کہ مارکولیتی کا یہ ٹیومر کینسرزدہ نہیں ہے تاہم پھر بھی اس ٹیومر سے ان کی موت کے خدشات ہیں مارکولیتی نے خود اس بات کو تسلیم کیا ہے کہ ان کا فون کا بے جا استعمال ان کے بیمار ہونے کی ایک اہم وجہ ہے اور دوسرے لوگوں کو خبردارکیا ہے کہ وہ فون کے بیجا استعمال سے گریز کریں دوسری جانب برطانوی سائنسدانوں نے اس بات سے انکار کیا ہے کہ مارکولیتی کے بیمار ہونے کی وجہ ان کا فون کا استعمال ہے تاہم کینسر کے معروف معالج اورماحولیات کے پروفیسر اینجلوگنولیوس اور نیوروسرجن ڈاکٹر گسپی گریسو نے مارکولیتی کے بیمار ہونے پر اس کے فون کے استعمال کے اثرات کے حوالے سے باقاعدہ ثبوت فراہم کیے ہیں انہوں نے بتایا کہ موبائل فونز اور کارڈلیس فونز سے مختلف برقی شعاعوں کااخراج ہوتا ہے جوکہ انسانی خلیات پر اثرانداز ہوکر دماغی رسولی جیسے مختلف ٹیومرز کاسبب بنتا ہے۔

سائنسدان

مزید :

صفحہ آخر -