آتشزدگی سے بچوں کی ہلاکت کی انکوائری مکمل ،سروسز ہسپتال کے ایس ڈی اوسمیت 3افسر برطرف

آتشزدگی سے بچوں کی ہلاکت کی انکوائری مکمل ،سروسز ہسپتال کے ایس ڈی اوسمیت ...

  

لاہور( جاوید اقبال ) آخر کار سروسز ہسپتال کی بچہ نرسری وارڈ میں آتشزدگی سے جاں بحق ہونے والے 12بچوں کی ہلاکت کا ذمہ دار قرار پانے والوں کے خلاف ایکشن لے لیاگیا ہے۔ 3افسروں کو ملازمت سے نکال دیاگیا۔ وزیراعلی انسپکشن ٹیم نے سانحہ کی انکوائری مکمل کی جس میں سانحہ کا سب سے بڑا ذمہ دار سروسز ہسپتال کے ایس ڈی او حافظ عثمان، اے سی ورکشاپ مینجر تفضل احمد، اے سی ٹیکنیشن محمد عثمان کو قرار دیا گیا، جن کو پرنسپل پروفیسر فیصل مسعود کے حکم پر میڈیکل سپرٹنڈنٹ ڈاکٹر ریحانہ ملک نے ملازمت سے برطرف کردیا ہے۔ جس کی منظوری گزشتہ روز بورڈ آف مینجمنٹ کے اجلاس میں دی گئی جس کے فوری بعد تینوں افسروں کو فوری طور پر ملازمت سے فارغ کردیا گیا ہے۔ دریں اثناءرپورٹ میں بچہ نرسری وارڈ میںفرائض انجام دینے والے دو ڈاکٹروں پی جی ٹرینی ڈاکٹر عامر افضل اور سینئر رجسٹرار ڈاکٹر فیصل کو وارننگ جاری کی گئی ہے اسی طرح اے ایم ایس ایم اینڈ آر ڈاکٹر سعید اقبال کو بھی انتظامی عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ جون میں سروسز ہسپتال کی بچہ ایمرجنسی میں شارٹ سرکٹ سے بچہ ایمرجنسی میں دھواں بھر گیا تھا جس سے دم گھٹنے سے 12 معصوم جاںبحق ہوگئے تھے، جس کی انکوائری وزیر اعلی کی معائنہ ٹیم کررہی تھی۔ انکوائری چیئر مین یاور سعید اورسینئر ممبر طاہر یوسف نے کی۔ انکوائری رپورٹ میں ہسپتال کے ایس ڈی او حافظ عثمان سعید کو ذمہ دار قرار دیا گیا تھا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شارٹ سرکٹ مذکورہ ایس ڈی او کی مجرمانہ غفلت کا نتیجہ ہے اور ایس ڈی او کی نااہلی لاپرواہی 12معصوم بچوں کی ہلاکت کا باعث بنی ۔ ایس ڈی او پر ناقص وائرنگ کرنے انسپکشن نہ کرنے، سٹاف نرسوں کے بار بار خطوط لکھنے کے باوجود اے سی کی وائرنگ تبدیل نہ کرنے، سوئچ نہ بدلنے کے الزامات بھی سچ ثابت ہوگئے جس کے ساتھ ساتھ اے سی مینجر تفضل احمد اور اے سی مکینک عثمان احمد کو بھی گنہگار قرار دیا گیا۔ ڈیوٹی ڈاکٹروں ڈاکٹر عامرافضل اور ڈاکٹر فیصل پر دھواں بھر جانے سے موقع سے فرار ہوجانے کا الزام ثابت ہوا، ان کو تھوڑا قصور وار قرار دیتے ہوئے ان پر نظر رکھنے ان کی کار کردگی مانیٹر کرنے اور وارننگ جاری کرنے کا حکم دیا گیا، جس پر ہسپتال انتظامیہ نے دونوں کی بچہ نرسری سے ڈیوٹی تبدیل کردی اور آئندہ کے لئے انہیں وارننگ جاری کی، تاہم ایس ڈی او کے خلاف ایکشن کے بعد ہسپتال میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ملازمین نے مٹھائیاں تقسیم کیں اور پرنسپل پروفیسر فیصل مسعود اور ایم ایس ڈاکٹر ریحانہ ملک کے حق میں نعرے بازی کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -