امجد مختار کی فرانزک رپورٹ18روز گزرنے کے باوجود موصول نہ ہوسکی

امجد مختار کی فرانزک رپورٹ18روز گزرنے کے باوجود موصول نہ ہوسکی

  

لاہور(کرائم رپورٹر) ستو کتلہ کے علاقہ میں گھر میں پر اسرار طور پر جاں بحق ہو نیوالے باب پاکستان کا نقشہ بنانے والے چیف آرکیٹیکٹ60سالہ امجد مختار کی فرانزک رپورٹ18روز گزرنے کے باوجود تاحال موصول نہیں ہو ئی ۔جبکہ پولیس بیٹے سے اس قتل کا اعتراف بھی نہیں کرواسکی ۔ ابتدائی پو سٹمارٹم رپورٹ میں جسم پر تشدد ہو نا ثابت نہیں ہوا تھا۔ پولیس نے موت کے اصل حقائق جا ننے کے لیے جسم کے ضروری سیمپل(پتھالو جیکل اور اٹاکسی ) لیکر فرانزک لیبارٹری بھجوا رکھے ہیں ۔ متوفی کے حراست میں لیے گئے بیٹے عمر شکیل نے حوالات سر پر اٹھائی ہو ئی ہے اور وہ شور کر کے پو لیس پر دباؤ بڑھا رہا ہے کہ وہ بے گنا ہ ہے اسے فوری رہا کیا جا ئے۔ ڈی آئی جی انوسٹی گیشن نے ہو می سائیڈ سیل کے انچارج اشرف کے ساتھ ایس ایچ او چو ہنگ کو بھی تفتیشی ٹیم میں شامل کر دیا ہے ۔تفتیشی ٹیم حراست میں حر است میں لی جا نیوالی گھر یلو ملا زمہ اور بیٹے عمرعمر شکیل سے مصروف تفتیش ہے ۔ڈی آئی جی انوسٹی گیشن سید خرم علی کے ترجمان اسد اور مقامی انچارج ہو می سائیڈ سیل سب انسپکٹراشر ف نے روز نا مہ پا کستان سے گفتگو کرتے ہو ئے بتایا ہے کہ لاش کا پو سٹمارٹم کروانے کے بعد ڈاکٹروں نے جو ابتدائی رپورٹ فراہم کی ہے اس میں مقتول پر تشدد ہو نا ثابت نہیں ہوا تاہم مو ت کے اصل حقائق جا ننے کے لیے جسم کے کچھ اعضا ء فرانزک لیبارٹری بھجوا دیے گئے ہیں ۔ اس مقد مے میں ملوث مبینہ ملزم عمر اسماعیل کے با رے میں پو لیس کا کہنا ہے کہ وہ انتہائی جذ با تی ہے اور اس نے جب سے حراست میں آیا ہے آسمان سر پر اٹھایا ہوا ہے گھر یلو ملازمہ بشری کو انھوں نے وقتی طور پر گھر بھجوا یا تھا ۔ اب دونوں کو بار بار بلوا کر تفتیش کی گئی ہے مقامی ڈی ایس پی اور ایس ایچ او چو ہنگ کو اس سیل میں ٹیم کے طور پر کا م کر نے کی ہد ایت کی گئی ہے ۔ مبینہ ملزم کے با رے میں پو لیس نے بتایا ہے کہ وہ نشے کا عادی ہے اور بار بار اپنے بیان بد ل رہا ہے ۔

امجد مختار

مزید :

صفحہ آخر -