جمرود ،رشتہ داروں کے مابین دیرینہ دشمنی دوستی میں بدل گئی

جمرود ،رشتہ داروں کے مابین دیرینہ دشمنی دوستی میں بدل گئی

  

جمرود(نمائندہ پاکستان) خالہ زاد بھائیوں کے درمیان عرصہ دراز سے چلے آنی والی دشمنی دوستی میں تبدیل خالہ زاد بھائی ایک دفعہ پھر شیر و شکر ایک دوسرے سے بغل گیر۔تفصیلات کے مطابق جمرود نئی آبادی کے رہائشی ڈاکٹر علی بیگ،جوہر کے بھتیجے زاہد ولد احمد خان کی شادی اپنے خالہ زاد کے بیٹی (س) دختر لالا باز سے ہوئی تھی،شادی کی کچھ عرصہ بعد (س)نے نا معلوم وجوہات کے بنا پر خود کشی کر لی تھی،جسکی وجہ سے دونوں خاندانوں میں دشمنی شروع ہوگئی،(س) کے خاندان والوں کو شک تھا کہ ان کی بیٹی دختر لالا باز کو اپنی سسرال والوں نے ہی قتل کیا ہے، دوسری طرف علی بیگ و جملہ خاندان روز اول سے انکاری تھے کہ لگایا گیا الزام غلط ہے۔ دونوں فریقین کے درمیان کئی دفعہ آمنا سامنا بھی ہوا تھا مگر علاقائی مشران کی کوششوں سے دونوں خاندانوں کے درمیان قومی امن معاہدہ (تیگہ) رکھا گیا اور اس دوران دونوں خاندانوں کے درمیان قائم غلط فہمی کو ختم کرنے کی کوشش جاری رکھی گئی جسکے نتیجے میں مشران ملک بختراوان منیا خیل،علاؤالدین لالا خیل،تاج محل ایڈوکیٹ اور گوہر خان کی کوششوں سے دونوں خاندان اس بات پر راضی ہوئے کہ اللہ کی کتاب پر اپنا فیصلہ کرے علی بیگ،جوہر پسران اشتیاق،شکیل،ضیاء الحق، ضیاء الرحمان اور زاہد نے مورخہ 19 اکتوبر 2018 بروز جمعہ بوقت 3 بجے اس بات کی تسلی دی کہ دختر لالا باز جو ان کی بہومرحومہ (س) کی موت میں ملوث نہیں ہیں جس پر (س) کی خاندان لالا باز،شاہد باز و پسران کا دل صاف ہوکر ایک دوسرے سے بغل گیر ہوئے اور آئندہ کے لئے رشتہ داری بحال رکھنے کا عہد کیا۔اس موقع پر پولیٹیکل تحصیلدار یاسر سلمان کنڈی کی ہدایت پر جمرود آڈاکے انچارج نور محمد آفریدی نے سیکورٹی کے بہتر انتظامات بھی کئے تھے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -