کراچی تا چترال پوری قوم مودی کا مقابلہ، دو دو ہاتھ کرنے کیلئے تیار ہے: سراج الحق

کراچی تا چترال پوری قوم مودی کا مقابلہ، دو دو ہاتھ کرنے کیلئے تیار ہے: سراج ...

  



پشاور (آن لائن) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینٹر سراج الحق نے کہا ہے کشمیر بچاؤ مارچ پاکستان بچاؤ مارچ ہے۔ گزشتہ 72 سالوں میں کسی ہندوستانی حکمران کو یہ جرات نہ ہوئی  کشمیر کو بھارتی یونین کا حصہ بنائیں لیکن جب مودی نے دیکھا پاکستان میں حکمران کمزور اور ملک سیاسی انتشار میں ہے تو کشمیر کو ہندوستانی یونین کا حصہ بنایا۔ کراچی سے چترال تک پوری قوم مودی کامقابلہ اور ان سے دودو ہاتھ کرنے کو تیار ہیں۔ اقوام متحدہ میں تقریر کے بعد مسلم(بقیہ نمبر19صفحہ12پر)

 ممالک نے بھی پاکستان کا ساتھ چھوڑدیا جو نااہل حکمرانوں کی ناکام پالیسیوں کا منہ بولتا ثبوت ہے۔اقوام متحدہ میں تقریر کیے ہوئے ایک مہینہ ہونے کو ہے حکمران بتائے تقریر کا کیا اثرہوا؟کیا انڈیا نے اپنا فیصلہ واپس لیا یا کرفیوں کا خاتمہ کیا۔ انڈیا صرف ایک زبان سمجھتا ہے اور وہ زبان ہے جہاد کا۔ فوج نے آج کشمیر کی لڑائی سری نگر میں نہ لڑی توپھر یہ لڑائی ان کو لاہور، اسلام آباد میں لڑنی ہوگی۔حکومت نے اب بھی فیصلہ نہ کیاتو پھر عوام خود فیصلہ کرے گی۔ حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان دن بدن کمزور ہورہا ہے نوجوان مایوس ہورہے ہیں اور نوجوانوں کے ہاتھوں میں ورلڈ بینک کے ذریعے سود کی ہتھکڑیاں پہنائی جارہی ہے۔  معیشت کو بہتر بنائے بغیر ملک ترقی کر سکتا ہے نہ روزگار بہتر ہوسکتاہے۔ حکومت کی ناقص معاشی پالیسیوں کی وجہ سے گزشتہ چودہ مہینوں میں معیشت مسلسل کمزور ہورہی۔وہ ایبٹ آباد میں عظیم الشان کشمیر بچاؤ مارچ سے خطاب کررہے تھے۔مارچ فوارہ چوک سے شروع ہوئی اور جی پی او چوک میں جلسہ کی شکل اختیار کی۔ کشمیر بچاؤ مارچ سے امیر جماعت اسلامی ایبٹ آباد ساجد قریش عباسی، امیر جماعت اسلامی مانسہرہ ڈاکٹر طارق شیرازی، سابق ضلعی امیر عبدالرزاق عباسی، نائب امیر جماعت اسلامی آزاد کشمیر نورالباری اور دیگر نے خطاب کیا۔ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی ہری پور غزن اقبال، نائب امیر جماعت اسلامی کے پی صابرحسین اعوان بھی موجود تھے۔سینٹر سراج الحق نے خطا ب کرتے ہوئے کہاکہ ہندوستان کشمیر کو بھارتی یونین کو حصہ بناکر اکنڈ بھارت کا خواب پورا کرنا چاہتے ہیں جس کے بعد وہ پاکستان کی پانی بندکرکے بنجر کرناچاہتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وہ کشمیریوں کو زبردستی ہندوبننے پر مجبور کر رہے ہیں جب کہ کشمیری عوام اپنے جدوجہد سے نہ صرف پاکستان کے لیے بلکہ ہندوستان کے 22 کروڑ مسلمانوں کا تحفظ کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکمران ہر محاذ پر ناکام ہوگئے ہیں اور سونامی عوام کے لیے غربت،کرپشن، بے روزگاری، مہنگائی اور مایوسی کا پیغام لے کر آئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ  حکومت معاشرتی و معاشی ریفارمز کا کوئی وعدہ پورا نہیں کر سکی۔ مہنگائی سے عوام اور بے روزگار ی سے نوجوان پریشان اور مایوس ہیں۔ عام آدمی عدم تحفظ کا شکار ہے۔انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی ملک میں حقیقی تبدیلی چاہتی ہے جس کے لیے ہم نوجوانوں اور عوام کو منظم کر 

رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمارے تمام مسائل کا حل نظام مصطفےٰؐ کے نفاذ میں ہے۔

سراج الحق  

مزید : ملتان صفحہ آخر