خوب روکا شکایتوں سے مجھے |ابراہیم ذوق |

خوب روکا شکایتوں سے مجھے |ابراہیم ذوق |
خوب روکا شکایتوں سے مجھے |ابراہیم ذوق |

  

خوب روکا شکایتوں سے مجھے

تونے مارا عنایتوں سے مجھے

بات قسمت کی ہے کہ لکھتے ہیں

خط وہ کن کن کنایتوں سے مجھے

حالِ مہر و وفا  کہوں تو  کہیں

نہیں شوق ان حکایتوں سے مجھے

کہہ دو اشکوں سے کیوں ہوکرتے کمی

شوق کم ہے کفایتوں سے مجھے

لے گئی عشق کی ہدایت ذوق

اُس سرے سب نہایتوں سے مجھے​

شاعر: ابراہیم ذوق

 ( شعری مجموعہ:دیوانِ ذوق  )

Khoob   Roka   Shikaayaton   Say   Mujhay

Tu   Nay   Maara   Inaayaton   Say   Mujhay

Baat   Qismat   Ki   Hay   Keh   Likhtay   Hen

Khat   Wo   Kin   Kin   Kinaayaton   Say   Mujhay

 Haal-e-Mehr-o-Wafaa   Kahun   To   Kahen 

Nahen   In   Haqaayaton   Say   Mujhay

 Kaih   Do   Ashkon   Say   Kiun   Ho    Kartay   Kami

Shauq   Kam   Hay   Kafaayaton   Say   Mujhay

 Lay    Gai   Eshq   Ki   Hidaayat   ZAUQ

Uss   Siray    Sab   Nihaayaton   Say   Mujhay

 Poet: Ibrahim   Zauq

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -