بھارتی سوشل میڈیا پر کراچی میں خانہ جنگی کی جھوٹی خبریں ، کیا کیا خبریں چل رہی ہیں؟ دیکھ کر پاکستانیوں کی ہنسی نہ رکے

بھارتی سوشل میڈیا پر کراچی میں خانہ جنگی کی جھوٹی خبریں ، کیا کیا خبریں چل ...
بھارتی سوشل میڈیا پر کراچی میں خانہ جنگی کی جھوٹی خبریں ، کیا کیا خبریں چل رہی ہیں؟ دیکھ کر پاکستانیوں کی ہنسی نہ رکے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)انتہا پسند بھارتی مودی سرکار کے آلہ کار بھارتی میڈیا کا بھونڈا پروپیگنڈا پکڑا گیا، کراچی میں عمارت میں ہونے والے گیس دھماکے کی خبروں کو اداروں کے درمیان بڑی لڑائی قرار دیا اور مین سٹریم میڈیا بھی اسی رنگ میں رنگ گیا لیکن دراصل یہ سب منفی پراپیگنڈا ہے ، درحقیقت پاکستان میں ایسا کچھ نہیں ہوا جس کا دعویٰ بھارتی میڈیا  نے کیا۔ 

تفصیلات کے مطابق بھارتی میڈیا نے جھوٹ اور منفی پراپیگنڈے میں اپنی حکومت کو بھی پیچھے چھوڑ دیا،ایسے جھوٹ اور افسانے گھڑے کہ سوشل میڈیا صارفین کے آپریشن کے بعد بھارتی میڈیا کی اصلیت پوری دنیا کے سامنے عیاں ہوگئی۔ایکسپریس ٹربیون کے مطابق بھارتی میڈیا نے تصاویر اور خبریں بڑے پیمانے پر شیئرکیں جس میں یہ بے بنیاد اور من گھرٹ دعویٰ کیاگیا کہ کراچی میں آرمی اور سندھ پولیس کے درمیان سول وار جیسی صورتحال ہے ۔ 

ایک بھارتی سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ " گلشن اقبال کے علاقے میں پاک آرمی اور سندھ پولیس کے درمیان شدید فائرنگ جاری ہے ، یہ تنازعہ اس وقت شروع ہوا جب پاک فوج نے سندھ پولیس کے ایس پی کو گرفتار کرنے کی کوشش کی اور دعویٰ کیا کہ یہ سب کچھ مقامی سوشل میڈیا رپورٹ کررہاہے "۔ کراچی کے شہری بخوبی واقف ہیں کہ ایسا کوئی واقعہ سرے سے ہوا ہی نہیں ۔ اس ٹوئیٹ کو بھی تقریباً ایک ہزار دفعہ ری ٹوئیٹ کیاگیا۔

بھارتی میڈیا کی طرف سے بے بنیاد پراپیگنڈا کو ہواد ینے کے لیے دکھائی جانیوالی ویڈیو کا جائزہ لیا گیا تو وہ جعلی محسوس ہوئیں،انٹرنیشنل ہیرالڈ اور ایک انڈین میڈیا آئوٹ لیٹ نے ٹوئٹر پر دعویٰ کیا کہ کراچی میں سندھ پولیس اور رینجرز کے درمیان مبینہ سول وار شروع ہونے کے بعد دس پولیس اہلکار مارے گئے ہیں "۔ 

حیرت کی بات یہ ہے کہ بھارتی میڈیا نے سول وار اور ہلاکتوں کا منفی پراپیگنڈا  تو کردیا لیکن مرنیوالوں کے نام ، جسدخاکی یا  آخری مقام کے بارے میں پوچھا جائے تو اس سے بھی کوئی مضحکہ خیز جواب ملے گا۔ 

صرف سوشل مٰیڈیا صارفین ہی نہیں بلکہ ان کا روایتی میڈیا بھی کسی سے پیچھے نہ رہا۔ زی نیوز، انڈیا ڈاٹ کام ، انڈیا ٹوڈے اور کئی دیگر میڈیا ہائوسز نے بھی جعلی خبریں پھیلائیں اور لکھا کہ کراچی میں تصادم کے بعد سول وار جیسی صورتحال ہے ۔ 

سی این این نیوز 18 تو حد ہی کردی اور لکھا کہ "عمران خان حکومت کے خلاف 4 اپوزیشن پارٹیز فورسز کیساتھ مل گئیں اور پاکستانی میڈیا پر یہ خبریں چلانے پر پابندی ہے " ۔ 

ایکسپریس ٹربیون کے مطابق جب سندھ پولیس سے بھارتی میڈیا کے ان دعووں کے بارے میں بات کی گئی تو حکام نے اس کی سختی سے تردید کی اور اسے پاکستان اور پاکستان کی مسلح افواج اور اداروں کیخلاف منفی پراپیگنڈا قراردیدیا۔ یادرہے کہ گزشتہ روز گلشن کے علاقے مسکن چورنگی پر ایک عمارت میں دھماکہ ہوا تھا جس کے باعث عمارت کو شدید نقصان پہنچا اور کم از کم پانچ افراد جاں بحق اور کئی زخمی ہوگئے تھے، وہاں پر ریسکیو کی سرگرمیوں، پولیس اور رینجرز کی موجود گی کو بھارتی میڈیا اور بھارتی شہریوں نے سول وار سے تشبیہہ دے کر پراپیگنڈا شروع کردیا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -